بلوچستان: دھماکے اور آپریشن میں تین اہلکاروں سمیت 13 ہلاک

Image caption ایف سی نے ڈیرہ بگٹی کے علاقے سوئی سے بھی دھماکہ خیز مواد بم برآمد کرنے کا دعویٰ کیا ہے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں ایک بم دھماکے اور سرچ آپریشن کےدوران تین ایف سی اہلکاروں سمیت 13 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

ایف سی بلوچستان کے ذرائع کے مطابق ضلع قلات کے علاقے سوراب میں ایک بم دھماکے میں فرنٹیئر کور کے تین اہلکار ہلاک اور چھ زخمی ہوگئے۔

ایف سی ذرائع نے بتایا کہ نامعلوم افراد نے سڑک کنارے دھماکہ خیز مواد نصب کیا تھا۔دھماکہ خیز مواد سنیچر کی صبح اس وقت زوردار دھماکے سے پھٹ گیا جب ایف سی کی ایک کانوائے وہاں سے گزر رہی تھی۔

دھماکے میں تین ایف سی اہلکار ہلاک جبکہ چھ زخمی ہوگئے۔ زخمیوں کو علاج کے لیے ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

ادھر فرنٹیئر کور کے ذرائع نے دعویٰ کیا ہے سوئی کے نواحی علاقے درنجن میں ایک سرچ آپریشن کے دوران فائرنگ کے تبادلے میں دس مسلح افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

دوسری جانب نامعلوم مقام سے بی بی سی کو بلوچ ریپبلیکن پارٹی کے ترجمان نے بتایا کہ سوئی کے گردونواح میں سکیورٹی فورسز نے آپریشن شروع کیا ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ اس آپریشن میں تین خواتین سمیت چودہ افراد کو ہلاک کیا گیا ہے۔

ایف سی کے ذرائع نے مزید بتایا کہ کوئٹہ کے علاقے فیض آباد میں ایک چھاپے کے دوران چھ تیار بم برآمد کر لیے گئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق ان بموں کو کوئٹہ شہر میں تخریب کاری کے لیے استعمال ہونا تھا تاہم اس سلسلے میں کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی۔

ایف سی نے ڈیرہ بگٹی کے علاقے سوئی سے بھی دھماکہ خیز مواد بم برآمد کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

ایف سی کے ذرائع نے بتایا کہ ایف سی کی جانب سے گیس پائپ لائنوں کو دھماکے خیز مواد سے اڑانے کی کاروائیوں میں ملوث افراد کے خلاف چھاپوں کے دوران یہ دھماکہ خیز مواد بر آمد کر لیا گیا ہے۔

اس چھاپے کے دوران تخریب کاری کی کاروائیوں میں ملوث ہونے کے الزام میں چھ افراد کو گرفتا بھی کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں