کوئٹہ: سریاب روڈ پر دھماکہ، ایک ہلاک، 18 افراد زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فائل فوٹو

پاکستان کے صوبے بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں سریاب روڈ کے مقام پر ایک دھماکے میں ایک بچی ہلاک اور خواتین اور بچوں سمیت 18 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

پاکستان کے سرکاری خبر رساں ادارے کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ اس حملے میں ایف سی کی ایک گاڑی کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

ایس ایس پی آپریشنز جعفر خان نے اس دھماکے میں زخمی ہونے والے افراد کی تعداد کی تصدیق کی ہے۔ انھوں نے بتایا کہ اس حملے میں تین کلو گرام سے زیادہ دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ دھماکہ خیز مواد ایک رکشے میں رکھا گیا تھا اور اس واقعے کے جائے وقوع سے قریب دکانوں کو نقصان پہنچا ہے۔

یاد رہے کہ دو ہفتے قبل دو صوبائی دارالحکومتوں کوئٹہ اور پشاور میں ایف سی اور پولیس پر حملوں میں اٹھارہ افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے۔

کوئٹہ اور پشاور میں سکیورٹی فورسز کو ایک ایسے وقت نشانہ بنایا گیا ہے جب وفاقی حکومت کالعدم شدت پسند تنظیم تحریک طالبان پاکستان سے مذاکرات کے ذریعے ملک میں دہشت گردی کو پرامن طریقے سے ختم کرنے کی جدوجہد کر رہی ہے۔

ادھر پاکستان کے وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے طالبان کے ساتھ براہ راست مذاکرات کرنے والے حکومتی اور طالبان کی رابطہ کار کمیٹیوں کا مشترکہ اجلاس آج طلب کیا ہوا ہے۔ پاکستان کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق ملاقات میں طالبان کے ساتھ حکومتی کمیٹی کی حالیہ براہ راست بات چیت کے نتائج کا جائزہ لیا جائے گا اور آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

توقع کی جا رہی ہے کہ مذاکرات کے حوالے سے دو اہم موضوعات، جنگ بندی میں توسیع اور قیدیوں کا تبادلہ اس اجلاس میں زیرِ بحث آئے گا۔

اسی بارے میں