مودی پہلے یہ فیصلہ کرلیں داؤد ابراہیم کہاں رہتا ہے، پھر پاکستان پر حملے کاخواب دیکھیں: چوہدری نثار

Image caption ’نریندر مودی کو پہلے یہ فیصلہ کرنا چاہیے کہ داؤد ابراہیم کہاں رہتا ہے اور پھر ان کو پاکستان پر حملے کاخواب دیکھنا چاہیے‘

وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نےبھارت کی سیاسی جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے وزارت عظمیٰ کے امیدوار نریندر مودی کے اس بیان کو غیر ذمہ دارانہ قرار دیا ہے جس میں انھوں نے کہا تھا کہ وہ منتخب ہونے کے بعد پاکستان سے داؤد ابراہیم کو ڈھونڈ نکالیں گے۔

سرکاری ذرائع ابلاغ کی جانب سے جاری کیے گئے اس بیان میں وفاقی وزیر داخلہ نے کہا ہے کہ نریندر مودی کو پہلے یہ فیصلہ کرنا چاہیے کہ داؤد ابراہیم کہاں رہتا ہے اور پھر ان کو پاکستان پر حملے کاخواب دیکھنا چاہیے۔

واضح رہے کہ ہفتے کے روز نریندر مودی نے گجراتی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر وہ وزیر اعظم منتخب ہو جاتے ہیں تو وہ بھارت کو مطلوب داؤد ابراہیم کو پاکستان سے بھارت لے کر آئیں گے۔

انٹرویو میں مودی نے کہا: ’میں یہ بی جے پی کا رکن ہونے کے ناطے نہیں بول رہا بلکہ ایک پیشہ ور پولیس اہلکار ہونے کے ناطے بات کر رہا ہوں جس نے کئی سال منظم جرائم کے خلاف کارروائیاں کی ہیں۔ میرے خیال میں یہ مشکل کام نہیں ہونا چاہیے۔‘

پاکستان کے وزیر داخلہ نثار علی چوہدری نے بیان میں کہا ہے: ’نریندر مودی کو پہلے یہ فیصلہ کرنا چاہیے کہ داؤد ابراہیم کہاں رہتا ہے اور پھر ان کو پاکستان پر حملے کاخواب دیکھنا چاہیے۔‘

انھوں نے کہا کہ متوقع بھارتی وزیراعظم اور ایک بڑی پارٹی کے امیدوار کا بیان اشتعال انگیز اور قابل مذمت ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا: ’لگتا ہے مودی نے اپنی شرمناک غلطیوں سے کچھ نہیں سیکھا جس کے باعث گجرات کے وزیر اعلیٰ ہوتے ہوئے کافی بدنام ہوئے۔‘

انھوں نے کہا کہ جو لوگ یہ بیان دے رہے ہیں کہ داؤد ابراہیم کو پاکستان نے پناہ دے رکھی ہے اور پاکستان کی سرزمین پر کارروائی کرنے کا سوچ رہے ہیں وہ یہ جان لیں کہ پاکستان نہ تو کمزور ملک ہے اور نہ ہی اس قسم کی غیر ذمہ دارانہ بیانات سے مرغوب ہو گا۔

’پاکستان کی جانب سے امن کی کوششوں کو کمزوری نہ سمجھا جائے اور ہماری مسلح افواج کے پاس صلاحیت اور پورا حق ہے کہ ایسی کارروائی کا بھرپور جواب دیں۔‘

اسی بارے میں