مہمند ایجنسی میں دھماکہ، چھ سکیورٹی اہلکار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption سنیچر کی صبح تحصیل پینڈیالے میں ایک سرکاری سکول کو بھی بم سے اْڑایا گیا

پاکستان کے قبائلی علاقے مہمند ایجنسی میں سنیچر کی صبح سڑک کے کنارے نصب دیسی ساختہ بم پھٹنے سے چھ سکیورٹی اہلکار ہلاک اور ایک زخمی ہوئے ہیں۔

پاکستانی فوج کے محکمۂ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی طرف سے جاری ایک ایس ایم ایس پیغام کے مطابق یہ واقعہ سنیچر کی صبح مہمند ایجنسی کے تحصیل پینڈیالے کے ایک گاؤں شاتی میں پیش آیا۔

ایس ایم ایس پیغام کے مطابق ’شدت پسندوں کی طرف سے نصب کیے گئے گھریلو ساختہ بم پھٹنے کے نتیجے میں چھ سکیورٹی اہلکار ہلاک اور ایک زخمی ہوئے۔‘

ہمارے نامہ نگار رفعت اللہ اورکزئی کے مطابق سنیچر کی صبح تحصیل پینڈیالے میں ایک سرکاری سکول کو بم سے اْڑایا گیا جس کے بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے میں سرچ آپریشن شروع کیا۔

سرچ آپریشن کے دوران سکیورٹی فورسز کی گاڑی سڑک کے کنارے نصب دیسی ساختہ بم سے ٹکرائی جس سے سکیورٹی اہلکاروں کے علاوہ گاڑی کو بھی شدید نقصان پہنچا۔

مہمند ایجنسی سمیت پاکستان کے دیگر قبائلی علاقے شدت پسندی سے متاثر ہوئے ہیں اور عرصے سے بم دھماکوں اور خودکش حملوں کی زد میں ہیں۔

ان قبائلی علاقوں میں سکیورٹی اہلکاروں کو اکثر شدت پسندوں کی طرف سے نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔

گذشتہ اتوار کو بھی باجوڑ اور مہمند ایجنسی میں حکام کے مطابق دو دھماکوں میں مقامی پولیس خاصہ دار فورس کے ایک اہلکار ہلاک اور ایک خاتون سمیت متعدد اہلکار زخمی ہوئے تھے۔

پولیٹکل انتظامیہ کے مطابق گذشتہ اتوار کو مہمند ایجنسی کی تحصیل صافی میں چمر کنڈ کے مقام پر سڑک کے کنارے اس وقت دھماکہ ہوا جب خاصہ دار فورس اور ایف سی کے اہلکار گاڑی میں وہاں گشت کر رہے تھے۔

حکام نے بتایا تھا کہ پہلے دھماکے کے بعد اہلکار اور دیگر شہری وہاں موجود تھے کہ اس دوران دوسرا دھماکہ ہوا جس میں ایک خاصہ دار ہلاک اور تین اہلکار زخمی ہوئے۔

اسی طرح آٹھ مئی کو شمالی وزیرستان کے علاقے میران شاہ، غلام خان روڈ پر دیسی ساختہ بم کے دھماکے میں نو سکیورٹی اہلکار ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہوئے تھے۔

یاد رہے کہ گذشتہ سال ستمبر میں نواز شریف کی حکومت نے ایک کل جماعتی کانفرنس کے اجلاس کے بعد کالعدم شدت پسند تنظیم تحریک طالبان پاکستان سے مذاکرات کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

تاہم ان مذاکرات کے تاحال کوئی خاطر خواہ نتائج سامنے نہیں آئے۔

اسی بارے میں