’کان سے جن نکالنے کی کوشش میں لڑکی ہلاک‘

فائل فوٹو تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption فضیلت کے اہل خانہ نے پولیس کو بتایا کہ فضیلت بی بی پر دورے پڑتے تھے جن سے ان کی حالت غیر ہو جاتی تھی

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے شہر فیصل آباد میں پراسرار علوم کے دعویدار پیر نے ایک جوان لڑکی کے کان کے راستے جن نکالنے کی کوشش میں اسے مبینہ طور پر تشدد کا نشانہ بنا کر ہلاک کر دیا۔

پولیس نے مبینہ عامل اور اس کے چیلے کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ لڑکی کی لاش پوسٹ مارٹم کے لیے بھجوا دی گئی ہے۔

فیصل آباد کی بٹالہ کالونی کے ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ پولیس خرم شہزاد نے بی بی سی کو بتایا کہ مقتولہ کے بھائی کے بیان پر مبینہ پیر اور اس کے چیلے شہباز کے خلاف زیر دفعہ 302 کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔

پولیس کے مطابق 22 سالہ فضیلت عرف زینت بی بی لاہور کی رہائشی تھیں اور شادی کے بعد فیصل آباد میں مقیم تھیں۔ ان کے اہل خانہ نے پولیس کو بتایا کہ فضیلت بی بی پر دورے پڑتے تھے جس سے ان کی حالت غیر ہوجاتی تھی۔

ان کے بھانجے شہباز کے کہنے پر وہ فضیلت کو فیصل آباد کے محلہ مراد آباد میں ایک 45 سالہ عامل محمد افضل کے پاس لے آئے۔ محمد افضل کا دعویٰ ہے کہ وہ پراسرار قوتوں کے مالک ہیں۔ انھوں نے کہا کہ لڑکی پر ایک جن نے قبضہ کر رکھا ہے اور وہ اپنی پراسرار نادیدہ قوتوں کی مدد سے لڑکی کو جن سے آزاد کرا دیں گے۔

فضیلت بی بی کے اہل خانہ کے مطابق ملزم نے لڑکی کو ایک کمرے میں بند کر کے اس پر تشدد شروع کردیا۔ پولیس کے مطابق وہ لڑکی کو ڈنڈے سے پیٹتا رہا اوراس دوران وہ منتر پڑھتا ہوا پانی لڑکی کے سر اور کان میں ڈالتا رہا تاکہ کان کے راستے جن باہر نکال سکے۔

اس دوران لڑکی کی حالت غیر ہوگئی اور اسے مقامی ہسپتال لے جایا گیا۔ ہسپتال کے عملے نے اہلِ خانہ کو بتایا کہ لڑکی کے دماغ کی شریانیں پھٹ چکی ہیں۔ لڑکی دو روز تک موت و حیات کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد گذشتہ روز دم توڑ گئی۔

ڈی ایس پی خرم شہزاد نے کہا کہ پولیس کو ہسپتال سے اطلاع ملی تھی اور بعد میں لڑکی کے اہل خانہ نے مقدمے کے اندراج کی درخواست دے دی تھی جس کے بعد گرفتاری عمل میں آئی۔

پاکستان میں ہرسال جن نکالنے کی آڑ میں مبینہ عامل لڑکیوں پر جنسی اور غیر جنسی تشدد کے درجنوں واقعات رپورٹ ہوتے ہیں جن میں سے کئی کیسوں میں اموات بھی ہوجاتی ہیں۔

فیصل آباد میں ہی ایک جعلی عامل نے گذشتہ برس ایک ستر سالہ شخص سے جن نکالنے کے لیے اسے گرم تیل میں کھڑا کر دیا جس سے وہ ہلاک ہوگئے۔

فیصل آباد ڈویژن ہی کے قصبے سمندری میں جعلی پیر کے خلاف ایک لڑکی سے اجتماعی زیادتی کا مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

گذشتہ مہینے ہی قصور میں پولیس نے ایک مبینہ جادوگر اور اس کے چیلوں کو ایک تیرہ سالہ لڑکی سے اجتماعی زیادتی کےالزام میں گرفتار کر لیا ہے۔

فیصل آباد کے حالیہ واقعے کے سلسلے میں بھی پولیس کو فضیلت عرف زینت بی بی سی سے زیادتی کا شبہ ہے۔ پولیس کے مطابق پوسٹ مارٹم کے بعد علم ہوسکے گا کہ اس جنسی تشدد کا نشانہ بنایا گیا یا نہیں۔

اسی بارے میں