آپریشن ضربِ عضب: نقل مکانی کرنے والوں کی تعداد پونے چھ لاکھ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption شمالی وزیرستان کے مختلف علاقوں سے نقل مکانی کرنے والوں کے اندراج کے لیے تین رجسٹریشن سینٹر قائم کیے گیے ہیں

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں جاری آپریشن ضربِ عضب کے تناظر میں ملک کے اندر نقل مکانی کرنے والے افراد کی تعداد 575000 تک پہنچ گئی ہے۔

کمشنر بنوں میاں محسن علی نے جمعے کو میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ نقل مکانی کرنے والے افراد میں اب تک 30 کروڑ روپے کی امدادی رقوم تقسیم کی جا چکی ہیں۔

کمشنر نے کہا کہ متاثرین کے لیے صوبہ پنجاب کی حکومت نے 50 ٹرک اور عمران خان فاؤنڈیشن نے 20 ٹرک امدادی سامان بھیجا ہے۔

انھوں نے کہا کہ شمالی وزیرستان کے مختلف علاقوں سے نقل مکانی کرنے والوں کے اندراج کے لیے تین رجسٹریشن سینٹر قائم کیے گیے ہیں۔

کمشنر بنوں کے ساتھ بریفنگ میں بریگیڈیئر آفتاب بھی موجود تھے جنھوں نے کہا کہ فوج 70 فیصد متاثرہ خاندنوں میں راشن تقسیم کر چکی ہے۔

انھوں نے کہا کہ نیم قبائلی علاقے بقہ خیل میں قائم کیمپ کو ایک ماڈل کیمپ بنایا جائے گا۔

بریگیڈیئر آفتاب نے کہا کہ متاثرین میں رمضان پیکج تقریباً تقسیم ہو چکا ہے اور عید پیکج کی تقسیم آج سے شروع ہو جائے گی۔

پاکستان کی فوج نے شمالی وزیرستان میں 15 جون کو آپریشن ضربِ عضب کا آغاز کیا تھا جس میں فوجی حکام کے دعوے کے مطابق اب تک وہاں سینکڑوں ملکی و غیر ملکی شدت پسند ہلاک ہو چکے ہیں اور ان کے اہم مراکز پر بھی حملے کیے جا رہے ہیں، جبکہ اس آپریشن میں 17 فوجی ہلاک ہو گئے ہیں۔

اسی بارے میں