دتہ خیل میں ڈرون حملے میں 15 افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ r
Image caption پاکستان ڈرون حملوں کی مذمت کرتا رہا ہے

پاکستان کے سرکاری میڈیا کے مطابق ملک کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں ایک امریکی ڈرون حملے میں 15 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

پاکستان کے سرکاری ٹی وی پی ٹی وی نے غیر مصدقہ اطلاعات کا حوالے دیتے ہوئے کہا کہ یہ ڈرون حملہ شمالی وزیرستان کے علاقے دتہ خیل میں زوئی سیدگی کے مقام پر ہوا جس میں 15 افراد ہلاک ہوئے اور مزید ہلاکتوں کا خدشہ ہے۔

خبر رساں ادارے روئٹرز نے سرکاری حکام کے حوالے سے بتایا کہ بدھ کو شمالی وزیرستان میں مشتبہ شدت پسندوں پر امریکی ڈرون حملے میں 13 افراد ہلاک ہوئے۔

سرکای میڈیا کے مطابق اس ڈرون حملے میں ایک مکان کو نشانہ بنایا گیا جس پر چار میزائل داغے گئے۔

خیال رہے کہ شمالی وزیرستان میں حکومتِ پاکستان نے مبینہ شدت پسندوں کے خلاف آپریشن ضربِ عضب کے نام سے عسکری کارروائی شروع کی ہے جس کی وجہ سے لاکھوں لوگوں نے وہاں سے نقل مکانی کی ہے۔

اس سے پہلے دس جولائی کو پاکستانی ذرائع ابلاغ میں شمالی وزیرستان ایجنسی کی تحصیل دتہ خیل میں امریکی جاسوس طیارے کی طرف سے ایک گاڑی کو نشانہ بنانے اور اس میں چار افراد ہلاک ہونے کی خبریں سامنے آئیں تھیں لیکن پاکستان کی وزارتِ خارجہ نے اس حملے کی تصدیق نہیں کی تھی۔

پاکستان ڈرون حملوں کی مذمت کرتا رہا ہے اور اسے اپنی خودمختاری کے خلاف سمجھتا ہے۔

پاکستانی فوج نے 15 جون کو شمالی وزیرستان میں شروع ہونے والے آپریشن ضربِ عضب میں سینکڑوں شدت پسندوں کو ہلاک کرنے اور ان کے متعدد ٹھکانوں کو تباہ کرنے کا عویٰ کیا ہے۔

ادھر آپریشن ضربِ عضب کے باعث نقل مکانی کرنے والوں کی مدد کے لیے پشاور، بنوں، ڈی آئی خان اور ٹانک میں ریلیف کا کام جاری ہے۔

اسی بارے میں