کوئٹہ: فائرنگ میں چار سیاسی کارکن ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption بلوچستان میں ایک عرصے سے نسلی اور سیاسی تشدد کے واقعات پیش آتے رہتے ہیں

پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں دو مختلف واقعات میں سیاسی جماعت کے چار کارکن ہلاک جبکہ فرنٹیئر کور کا ایک اہلکار زخمی ہو گیا۔

بلوچستان کے علاقے پشتون آباد میں نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کر سیاسی جماعت کے چار کارکنوں کو ہلاک کر دیا۔

پشتون آباد پولیس کے ایک اہلکار نے بتایا کہ محمود آباد کے علاقے میں نمازِ جمعہ کے بعد نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کی۔

فائرنگ کے نتیجے میں ایک ہی خاندان کے تین افراد سمیت چار افراد ہلاک ہوگئے۔

ہلاک ہونے والوں میں باپ، بیٹا اور پوتا شامل ہیں۔

پولیس اہلکار نے بتایا کہ اس واقعے کی تحقیقات کا حکم دے دیا گیا ہے۔

دوسری جانب پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے رکن اسمبلی نصر اللہ زیرے نے فون پر بی بی سی کو بتایا کہ ہلاک ہونے والے افراد کا تعلق ان کی پارٹی سے تھا۔ انھوں نے اسے دہشت گردی کا واقعہ قرار دیا۔

دوسری جانب کوئٹہ میں ہونے والے ایک بم دھماکے میں فرنٹیئر کور کا ایک اہلکار زخمی ہوگیا۔ بم دھماکا کوئٹہ کے نواحی علاقے مستونگ روڈ پر ہوا۔

پولیس کے مطابق شیخ زید ہسپتال کے قریب نامعلوم افراد نے دھماکہ خیز مواد نصب کیا تھا۔ دھماکہ خیز مواد اس وقت پھٹا جب فرنٹیئر کور کی گاڑیاں وہاں سے گزر رہی تھیں۔

دھماکے سے ایک اہلکار زخمی ہوا جسے علاج کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔

اسی بارے میں