پی ٹی آئی قومی اسمبلی میں واپس آ جائے: ایاز صادق

تصویر کے کاپی رائٹ National Assembly
Image caption سپیکر قومی اسمبلی سے لاہور میں جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے ملاقات کی

قومی اسمبلی کے سپیکر سردار ایاز صادق نے پاکستان تحریکِ انصاف پر زور دیا ہے کہ وہ قومی اسمبلی میں واپس آ جائے اور اپنی شکایات کے ازالے کے لیے قومی اسمبلی کی کارروائی میں بھرپور حصہ لے۔

لاہور میں جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق اور جماعت کے دیگر ارکان کے ساتھ ملاقات کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے سپیکر قومی اسمبلی کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف کے ارکان کی جانب سے جمع کرائے جانے والے استعفوں کی تصدیق کے عمل میں کچھ وقت لگے گا۔ تاہم انھوں نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ پیر کی شام تک تحریکِ انصاف کے ساتھ معاملات طے پا جائیں گے۔

ایاز صادق کا کہنا تھا کہ انھوں نے بطورِ سپیکر ہمیشہ ایک غیر جانبدارانہ کردار ادا کیا ہے اور وہ جمہوریت اور آئین کی بالا دستی کے لیے کام کرتے رہیں گے۔

جماعت اسلامی کے وفد کی سپیکر کے ساتھ ملاقات میں امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے سپیکرسے درخواست کی وہ تحریک انصاف کے ارکان اسمبلی کے استعفے منظور نہ کریں کیونکہ اس سے ملک میں سیاسی بحران میں مزید اضافہ ہو جائے گا۔

سراج الحق کا کہنا تھا کہ ملک کی دیگر سیاسی جماعتیں بھی اس بات پر متفق ہیں کہ اگر تحریک انصاف کے استعفے منظور نہیں کیے جاتے تو سیاسی قوتوں کو حکومت اور احتجاجی جماعتوں کے درمیان صلح صفائی کرانے کے لیے مذید وقت ملے گا۔

اس سے قبل سنیچر کی شام حکومت اور پاکستان تحریکِ انصاف کے درمیان مذاکرات کا تیسرا دور وزیراعظم کے استعفے پر اتفاق نہ ہونے کے باعث کسی سمجھوتے کے بغیر ختم ہوگیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مذاکرات کے خاتمے کے بعد دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ’نواز شریف کی حکومت کو نہیں چلنے دیں گے۔‘

سنیچر کی شب اسلام آباد میں دھرنے کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے حکومت سے کہا کہ ’مذاکراتی ٹیم بھیجنے سے پہلے کنٹینر ہٹواؤ‘ اور وزیراعظم نواز شریف کو مخطاطب کرتے ہوئے یہ کہا کہ ’نواز شریف اگر دھاندلی نہیں کی ہے تو تیس دن بعد واپس آ جاؤ۔‘

عمران خان نے مزید کہا کہ ’کنٹینرز ہٹا کر اس غلط فہمی میں نہ رہنا کہ ہمارا موقف نرم ہو جائے گا۔‘

اسی بارے میں