’دتہ خیل میں بمباری سے 35 دہشت گرد ہلاک‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption آپریشن ضربِ عضب کے دوران 900 سے زیادہ شدت پسندوں کو ہلاک کیا جا چکا ہے

پاکستانی فوج کے مطابق ملک کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں جاری آپریشن ضربِ عضب کے دوران جنگی طیاروں کی بمباری سے 35 دہشت گرد ہلاک ہوگئے ہیں۔

فوج کے شعبۂ تعلقاتِ عامہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا ہے کہ طیاروں نے تحصیل دتہ خیل کے شمال مغرب میں دہشت گردوں کے تین ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔

بیان میں ہلاک شدگان کی قومیت یا شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔

خیال رہے کہ دتہ خیل میں ہی منگل کو آپریشن ضرب عضب کے دوران سکیورٹی فورسز اور شدت پسندوں کے مابین جھڑپ میں ایک سکیورٹی اہلکار، ایک شہری اور چھ شدت پسند ہلاک ہوگئے تھے۔

شمالی وزیرستان میں شدت پسندوں کے خلاف پاکستانی فوج کا آپریشن ضربِ عضب تقریباً تین ماہ سے جاری ہے اور گذشتہ ہفتے آئی ایس پی آر نے بتایا تھا کہ اب تک اس آپریشن کے دوران 910 شدت پسندوں کو ہلاک کیا جا چکا ہے۔

آئی ایس پی آر نے بیان میں یہ بھی کہا تھا کہ اب تک کی کارروائی میں 82 فوجی ہلاک ہوئے جبکہ 269 زخمی ہیں۔

فوج کا کہنا ہے کہ اس آپریشن کے دوران میر علی، دتہ خیل، بویا اور دیگان کے قصبوں کو شدت پسندوں سے خالی کروایا گیا ہے جبکہ کھجوری، میرعلی، میران شاہ، دتہ خیل روڈ اور گھریوم جھالر روڈ کو محفوظ بنایا جا چکا ہے۔

جون کے وسط میں اس آپریشن کے آغاز پر کارروائی میں ہونے والی پیش رفت کے بارے میں تقریباً تواتر سے میڈیا کو آگاہ کیا جاتا تھا تاہم گذشتہ کچھ عرصے سے فوجی آپریشن کے بارے میں سرکاری معلومات کی فراہمی میں کمی آئی ہے۔

آپریشن ضرب عضب میں سکیورٹی فورسز کی جانب سے حاصل ہونے والے اہداف کے بارے میں بھی آزاد ذرائع سے تصدیق نہیں ہو سکی کیونکہ علاقے تک غیر جانبدار میڈیا سمیت کسی بھی غیر متعلقہ شخص کو آزادانہ رسائی حاصل نہیں۔

اسی بارے میں