ایڈمرل ذکااﷲ پاکستانی بحریہ کے نئے سربراہ

تصویر کے کاپی رائٹ pak navy
Image caption ایڈمرل ذکااللہ (بائیں سے پانچویں، بیٹھے ہوئے) نے اپنے کریئر کے دوران متعدد اعزازات حاصل کیے ہیں

ایڈمرل ذکااﷲ کو پاکستانی بحریہ کا نیا سربراہ مقرر کر دیا ہے۔

سرکاری ریڈیو کے مطابق صدر ممنون حسن نے وزیراعظم کی سفارش پر ایڈمرل ذکااﷲ کو بحریہ کا سربراہ مقرر کیا ہے۔

ایڈمرل ذکا اللہ ایڈمرل آصف سندیلہ کی جگہ لیں گے جو تین سال اپنی ذمہ داریاں نبھانے کے بعد رواں ماہ سبک دوش ہو رہے ہیں۔

ایڈمرل ذکا اللہ نے 1975 میں پاکستان نیوی میں شمولیت اختیار کی جبکہ 1978 میں آپریشن برانچ میں تعینات کر دیا گیا تھا۔

وہ بحری جہازوں پی این ایس بابر اور پی این ایس ٹیپو میں اعلیٰ عہدوں پر تعینات رہے۔ اس کے علاوہ انھوں نے قطر میں ڈیفنس اتاشی کی ذمہ داریاں بھی ادا کیں۔

انھیں اپنے کرئیر کے دوران اعزازی شمشیر اور سونے کے تمغے سمیت ستارۂ امتیاز اور تمغۂ امتیاز جیسے اعزازات سے بھی نوازا گیا۔

یاد رہے کہ گذشتہ چند سالوں میں دیگر افواج کی طرح بحریہ کو بھی شدت پسندوں کے حملوں کا سامنا رہا ہے۔

اپریل 2011 میں کراچی میں پاکستانی بحریہ کی ایک بس پر ہونے والے بم حملے میں پانچ افراد ہلاک اور نو زخمی ہوگئے ہیں۔

سب سے بڑا حملہ مئی 2011 میں مہران بیس پر کیا گیا جس میں دس اہلکاروں سمیت 13 افراد ہلاک ہوئے۔

چند ہفتے قبل پاکستان کے یوم دفاع کے موقعے پر پاکستانی بحریہ کے کراچی ’ڈاک یارڈ ‘ پر حملہ ہوا جس میں ایک افسر ہلاک اور سات اہلکار زخمی ہوئے۔

کراچی میں مہران نیول بیس اور ڈاک یارڈ پر ہونے والے حملوں میں نیوی کے کچھ اہلکار بھی شامل تھے۔

اسی بارے میں