تحریک طالبان پاکستان کا لشکر اسلام کی حمایت کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption تحریک طالبان نے خیبر ایجنسی میں لشکر اسلام اور دیگر شدت پسند گروپوں کی مکمل حمایت کا اعلان کیا ہے

کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے قبائلی علاقے خیبر ایجنسی میں فوجی کارروائی میں لشکر اسلام اور دیگر شدت پسند گروپوں کی مکمل حمایت کا اعلان کرتے ہوئے اپنے جنگجو روانہ کرنے کی بات کی ہے۔

تحریک طالبان پاکستان کی جانب سے ای میل کے ذریعے ارسال ایک پیغام میں اعلان کیا گیا ہے:

’کچھ مجاہدین مقام تشکیل تک پہنچ چکے ہیں اور عملی طور پر کام بھی شروع کر چکے ہیں۔ اس کے علاوہ وہ تمام مجاہدین انتظار کریں جنھوں نے امیر تحریک طالبان پاکستان فضل اللہ خراسانی سے بیعت کی ہے۔‘

دوسری جانب کالعدم تنظیم تحریک طالبان پاکستان نے محمد خراسانی کو نیا ترجمان مقرر کیا ہے۔ وہ معزول شدہ ترجمان شاہد اللہ شاہد کی جگہ سنبھالیں گے۔

تحریک طالبان پاکستان کی جانب جس ای میل کے ذریعے یہ اعلان کیا گیا ہے، وہ ای میل معزول ترجمان شاہد اللہ شاہد ہی کے نام کا ای میل ایڈریس ہے۔

بیان کے مطابق تحریک طالبان پاکستان کی رہبری شوریٰ نےکچھ عرصہ قبل مرکزی ترجمان شاہد اللہ شاہد کو معزول کرنے کا فیصلہ کیا تھا، جس کے بعد آج تحریک کی شوریٰ کی طرف سے باقاعدہ طور پر نئے مرکزی ترجمان محمد خراسانی کی تقرری کا اعلان کیا گیا ہے۔

نام سے بظاہر محسوس ہوتا ہے کہ یہ اصل نام نہیں ہے۔ جہادی حلقوں میں اکثر اس قسم کے نام اختیار کیے جاتے ہیں، تاہم یہ پہلی نام پہلی بار سنا گیا ہے۔

تنظیم نے نئے ترجمان کے ساتھ رابطے کے لیے نئی ای میل بھی جاری کی ہے۔ مبصرین کے خیال میں شاہد اللہ شاہد کی معزولی کے بعد پہلی مرتبہ تحریک نے نئے ترجمان کی تقرری میں اتنا وقت لیا ہے۔ اس سے قبل نئے ترجمان کے نام کا اعلان فوری طور پر کر دیا جاتا تھا۔ بعض ماہرین اسے تحریک کو درپیش مشکلات کی عکاسی قرار دیتے ہیں۔

تنظیم نے تیسرا اعلان ایک روز بعد کرنے کا بھی وعدہ کیا ہے تاہم اعلان کیا ہے، اس کی وضاحت نہیں کی ہے۔

اسی بارے میں