’خودکش حملوں کے منصوبہ ساز سمیت 17 شدت پسند ہلاک‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستانی فوج کے مطابق ملک کے قبائلی علاقہ جات میں جاری فوجی کارروائی کے دوران مزید 17 شدت پسند اور دو فوجی جوان ہلاک ہوئے ہیں۔

خیبر ایجنسی میں حکام کے مطابق شدت پسندوں کے خلاف محدود اور مخصوص اہداف پر کارروائی کی گئی جس میں خود کش حملوں کے ماسٹر مائنڈ سمیت 13 شدت پسند ہلاک کر دیے گئے۔

فوج کے تعلقات عامہ کے شعبے کے مطابق یہ کارروائی وادی تیراہ میں اکا خیل کے علاقے میں اتوار کی صبح کی گئی اور شدت پسندوں کے دس ٹھکانوں اور ان کے اسلحہ ڈپو کو فضائی حملے کر کے تباہ کر دیا گیا ہے ۔

آئی ایس پی آر کے مطابق جن 13 شدت پسندوں کو ہلاک کیا گیا ان میں ایک اہم شدت پسند کمانڈر شامل ہے جو خود کش حملہ آوروں کو تربیت فراہم کرنے کا ماہر تھا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ ہلاک ہونے والے شدت پسندوں میں دو خود کش بمبار بھی شامل تھے۔

اس کے علاوہ آئی ایس پی آر کے مطابق شمالی وزیرستان میں جاری آپریشن ضربِ عضب کے دوران اتوار کی شام غرلامے میں ہونے والی جھڑپ میں چار شدت پسند مارے گئے جبکہ اس کارروائی میں دو فوجی جوان بھی ہلاک ہوئے۔

خیبر ایجنسی میں گزشتہ تین ہفتوں سے فوجی آپریشن خیبر ون جاری ہے۔ اس آپریشن میں وادی تیراہ کے علاقے اکا خیل سپاہ اور علم گدر میں شدت پسندوں کے خلاف کارروائیاں کی گئی ہیں۔

خیبر ایجنسی میں جاری فوجی آپریشن کی وجہ سے لوگوں نے بڑے پیمانے پر نقل مکانی شروع کی ہے اور چند ہفتوں کے دوران لگ بھگ ڈھائی لاکھ افراد نقل مکانی کرکے پشاور اور دیگر قریبی محفوظ علاقوں میں پہنچے ہیں ۔ نقل مکانی کرنے والے افراد میں ایک لاکھ چھتیس ہزار بچے اور پچپن ہزار سے زیادہ خواتین شامل ہیں۔

ان متاثرین کے لیے کوئی علیحدہ کیمپ پشاور میں قائم نہیں کیا گیا ہے ۔ بیشتر لوگ اپنے طور پر کرائے کے مکان حاصل کر رہے ہیں اور یا رشتہ داروں کے پاس جا رہے ہیں۔

ان متاثرین کا کہنا ہے کہ علاقے میں بمباری ہو رہی ہے وہاں رہ نہں سکتے جبکہ ادھر پشاور میں کرائے کے مکان نہیں ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ علاقے میں فوج اور ایف سی کے اہلکار موجود ہیں جو لوگوں کو نہیں آنے دیتے۔

پشاور میں پشتہ خرہ اور باڑہ قدیم کے علاقے میں نقل مکانی کرنے والے افراد کی گاڑیاں دیکھی جا سکتی ہیں۔

خیبر ایجنسی میں گزشتہ چار سالوں سے فوجی کارروائیاں جاری ہیں جس میں بڑے پیمانے پر ہلاکتیں ہوئی ہیں لیکن علاقے میں امن قائم نہیں کیا جا سکا۔

اسی بارے میں