مستونگ: دھماکے سے آٹھ بوگیاں پٹری سے اترگئیں

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption بلوچستان میں حالات کی خرابی کے بعد ضلع مستونگ کے علاقے دشت سمیت کچھی، سبی اور نصیر آباد کے اضلاع میں متعدد بار مسافر ٹرینوں پر حملے ہو چکے ہیں

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ کے قریب ایک مسافر ٹرین پر بم حملے کے نتیجے میں آٹھ بوگیاں پٹری سے اتر گئیں۔

لاہور سے کوئٹہ آنے والی اکبر بگٹی ایکسپریس پر حملہ کوئٹہ شہر سے 23 کلو میٹر دور مستونگ کے علاقے دشت میں ہوا۔

ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ یلویز کوئٹہ ڈویژن فیض بگٹی نے میڈیا کو بتایا چونکہ یہ ٹرین تاخیر سے پہنچی جس کے باعث شدت پسندوں نے تاریکی کا فائدہ اٹھایا۔

کوئٹہ میں ریلوے کنٹرول کے ایک اہلکار کے مطابق نامعلوم افراد نے ریلوے لائن کے ساتھ دھماکہ خیز مواد نصب کیا تھا اور جس وقت ٹرین وہاں سے ٹرین تو اس میں دھماکہ ہو گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ دھماکے کے باعث ریلوے لائن کا کچھ حصہ تباہ ہوا جس کی وجہ سے آٹھ بوگیاں پٹڑی سے اترگئیں۔

انھوں نے بتایا کہ واقعے میں دو افراد معمولی زخمی ہوئے جنھیں علاج کے لیے سول ہسپتال کوئٹہ منتقل کر دیا گیا۔

بلوچستان میں حالات کی خرابی کے بعد ضلع مستونگ کے علاقے دشت سمیت کچھی، سبی اور نصیر آباد کے اضلاع میں متعدد بار مسافر ٹرینوں پر حملے ہو چکے ہیں۔

ان حملوں کے باعث حکام نے کوئٹہ اور سندھ کے درمیان مسافر ٹرینوں کو دن میں گزارنے کی حکمتِ عملی اختیار کی ہے۔

دوسری جانب کالعدم تنظیم یونایٹڈ بلوچ آرمی نے اس دھماکے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

اسی بارے میں