پاکستان کے لیے فوجی امداد میں ایک سال کی مشروط توسیع

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption امریکہ کولیشن سپورٹ فنڈ کے تحت دہشت گردی کے خلاف جنگ پر اٹھنے والے پاکستانی اخراجات کی ادائیگی کرتا ہے

امریکی کانگریس نے پاکستان میں شدت پسندوں کے خلاف فوجی کارروائی کے لیے دی جانے والی امداد میں مزید ایک برس کی توسیع کو اپنی حتمی بجٹ تجاویز شامل کر لیا ہے۔

521 ارب ڈالر کے بجٹ میں پاکستان کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں مالی مدد کی معیاد تو ایک برس کے لیے بڑھا دی گئی ہے لیکن ساتھ ہی کچھ نئی شرائط بھی عائد کی گئی ہیں۔

پاکستانی فوج ایک ’بائینڈنگ فورس‘ ہے

واشنگٹن سے بی بی سی اردو کے نامہ نگار برجیش اپادھیائے کے مطابق نئی تجاویز میں کہا گیا ہے کہ کوالیشن سپورٹ فنڈ کی مد میں پاکستان کو دی جانے والی رقم اب ایک ارب ڈالر سے زیادہ نہیں ہوگی۔

اس کے علاوہ امریکی وزیرِ دفاع کو 30 کروڑ ڈالر تک کی رقم کانگریس کی شرائط کو بالائے طاق رکھتے ہوئے جاری کروانے کا اختیار بھی واپس لے لیا گیا ہے۔

اب انھیں اس رقم کے اجرا کے لیے بھی کانگریس کی عائد کردہ شرائط کے پورے ہونے کی یقین دہانی کروانا ہوگی۔

پاکستان کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں معاونت کے لیے رقم کے اجرا سے قبل امریکی وزیرِ دفاع کو کانگریس کو یقین دلانا ہوگا کہ پاکستان کی شمالی وزیرستان میں جاری فوجی کارروائی کے دوران حقانی نیٹ ورک کی محفوظ پناہ گاہیں اور شدت پسندوں کی آزادانہ نقل و حرکت ختم ہوگئی ہے۔

اس کے علاوہ انھیں یہ بھی ثابت کرنا ہوگا کہ پاکستان ایسے قدم اٹھا رہا ہے کہ اس آپریشن کے بعد حقانی نیٹ ورک شمالی وزیرستان میں دوبارہ ٹھکانہ نہیں بنا پائے گا۔

ان شرائط کے علاوہ کوالیشن سپورٹ فنڈ کے اجرا کے لیےگذشتہ بجٹ میں لاگو کی گئی شرائط بھی برقرار رکھی گئی ہیں۔

ان شرائط کے تحت امریکی وزرائے خارجہ و دفاع کو امریکی کانگریس کو یہ بتانا تھا کہ پاکستان القاعدہ، تحريكِ طالبان پاکستان، حقانی نیٹ ورک اور کوئٹہ شوری کے خلاف کارروائی میں کیا مدد کر رہا ہے۔

اس کے علاوہ امریکی سازوسامان کی نقل و حرکت کے تحفظ کے لیے پاکستان کے کردار اور پاکستانی سرزمین سے امریکی یا افغان فوج پر ہونے والے حملوں کو روکنے کے لیے پاکستانی اقدامات کے بارے میں شرائط بھی بجٹ کا حصہ تھیں۔

خیال رہے کہ امریکہ کولیشن سپورٹ فنڈ کے تحت دہشت گردی کے خلاف جنگ پر ہونے والے پاکستانی اخراجات کی ادائیگی کرتا ہے۔

امریکہ کی جانب سے پاکستان میں دہشت گردوں کے خلاف کارروائی پر اٹھنے والے اخراجات چار اقساط میں ادا کیے جاتے ہیں۔

اس مد میں پاکستان کو آخری امداد رواں برس اکتوبر میں ملی تھی جب امریکہ نے پاکستان کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں معاونت کے لیے 37 کروڑ دس لاکھ ڈالر کی رقم پاکستان کو دی تھی۔

اسی بارے میں