سکیورٹی خدشات، تعلیمی اداروں میں چھٹیاں

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption مختلف تعلیمی اداروں کو سکیورٹی خدشات کے پیشِ نظر مختلف درجوں میں تقسیم کیا گیا ہے

پشاور کے آرمی پبلک سکول پر حملے کے بعد مختلف تعلیمی اداروں میں معمول سے پہلے تعطیلات کر دی گئی ہیں اور سکیورٹی کے سخت انتظامات کرنے کے احکامات جاری کیے گئے ہیں۔

اس سلسلے میں سی سی پی او لاہور کیپٹن (ر) محمد امین وینس کی زیرِ صدارت لاہور میں ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں تعلیمی اداروں کی سیکورٹی کے خدشات کے پیشِ نظر A, A+, B اور C کی درجہ بندیوں میں تقسیم کیا گیا۔

سی سی پی اور لاہور نے اجلاس کے حوالے سے جاری کیے گئے ایک پریس ریلیز میں بتایا کہ تعلیمی اداروں کی انتظامیہ کو لاہور پولیس کی جانب سے سیکورٹی کے حوالے سے ہدایات جاری کر دی گئیں ہیں جن پر عمل درآمد کے لیے دو ہفتے کا وقت دیا گیا ہے۔

اس حوالے سے A+ اور Aکیٹیگری کے جو تعلیمی ادارے ان ہدایات پر عمل درآمد میں ناکام رہے انہیں اس مدت کے بعد کھلنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

محمد امین وینس نے مزید بتایا کہ تمام نجی تعلیمی اداروں کو سکولوں میں وینٹج پوائنٹس بنانے، کیمرے نصب کرانے، باؤنڈری والز کو درست کروانے کے ساتھ ساتھ سیکورٹی گارڈز رکھنے پرپابند کیا جائے گا۔

اُنہوں نے کہا کہ سکولوں، کالجز اور دیگر تعلیمی اداروں کی سیکورٹی کو یقینی بنانے کے لیے ایلیٹ فورس، کوئیک رسپانس فورس، بیٹ سیفٹی کمیٹیز اور پولیس اسٹیشنز کی گاڑیوں کے علاوہ پولیس کے سنائپرز کو تعینات کرنے سمیت ہر ممکن اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

اسلام آباد میں بھی بعض تعلیمی اداروں نے قبل از وقت تعطیلات کر دی ہیں اور بی بی سی کو موصول ہونے والی ایک ای میل میں ایک مقامی سکول کی انتظامیہ نے والدین کو سکیورٹی خدشات کے پیشِ نظر سکول بند کرنے کی اطلاع کی ہے۔

اس اطلاع میں یہ بھی لکھا گیا ہے کہ تمام جاری امتحانات منسوخ کر دیے گئے ہیں جنہیں بعد میں دوبارہ منعقد کیا جائے گا۔

لاہور میں اس اجلاس میں ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف، سی ٹی او طیب حفیظ چیمہ اور تمام ڈویژنل ایس پیز موجود تھے۔

کیپٹن (ر) محمد امین وینس نے کہا کہ تمام نجی تعلیمی اداروں کو اس بات کا پابند کیا جائے کہ وہ سیکورٹی گارڈز رکھیں جن کے لیے بلڈنگ کی چھت پر یا گیٹ کے اوپر وینٹج پوائنٹ یا مورچہ بنایا جائے جس میں یہ گارڈز کھڑ ے ہو کر ڈیوٹی دیں گے۔

انہوں نے تمام ایس پیز کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ A+کیٹگری کے تعلیمی اداروں کے لیے ماہر نشانہ باز سنائپر تعینا ت کیے جائیں جو وینٹج پوائنٹ میں چوکنا ہو کر ڈیوٹی دیں۔

سی سی پی او نے ڈی آئی جی آپریشنز اور تمام ایس پیز کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ وہ لاہور کے تعلیمی اداروں بالخصوص +A، A اور B کیٹیگری کے تعلیمی اداروں کے منتظمین سے خودقریبی رابطہ رکھیں اور اس بات کو یقینی بنائیں کہ یہ ادارے پولیس کی جانب سے دی گئی سیکورٹی ایڈوائس پر ہر صورت عمل درآمد کریں۔

اسی بارے میں