ڈیرہ بگٹی: شدت پسندوں سے جھڑپ میں ایف سی اہلکار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption بلوچستان میں امن و امان کی صورتحال گذشتہ کئی سالوں سے خراب ہے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع ڈیرہ بگٹی میں حکام کے مطابق ایک جھڑپ میں آٹھ شدت پسند اور ایف سی کا ایک اہلکار ہلاک ہو گیا ہے۔

فرنٹیئر کور کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق سوئی کے علاقے سری نالہ گوٹھ مندرا میں ایف سی کے قافلے پر کالعدم تنظیم کے شدت پسندوں نے حملہ کیا۔ حملے میں ایف سی کا ایک اہلکار ہلاک اور دو زخمی ہوگئے۔

بیان میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ جوابی کارروائی میں آٹھ شدت پسند ہلاک جبکہ 11 فرار ہو گئے۔

حکام کے مطابق حملہ کرنے والے شدت پسند عرصہ دراز سے سکیورٹی فورسز پر حملوں،گیس پائپ لائن اور ریلوے کے ٹریک اڑانے اور عام شہریوں کی ہلاکت میں ملوث تھے۔

ایف سی کے قافلے پر حملے کی ذمہ داری کالعدم عسکریت پسند تنظیم بلوچ رپبلکن آرمی نے قبول کی ہے۔

ادھر ایران سے متصل ضلع کیچ کے علاقے تلار میں تعمیراتی کمپنی فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن کے کیمپ پر بھی نامعلوم مسلح افراد نے حملہ کیا ہے۔

کیچ انتظامیہ کے ایک اہلکار کے مطابق اس حملے میں کمپنی کے دو اہلکار زخمی ہوئے۔اس حملے کی ذمہ داری کالعدم بلوچستان لبریشن فرنٹ نے قبول کی ہے۔

دریں اثناء فرنٹیئرکور بلوچستان نے افغانستان سے متصل سرحدی ضلع کے علاقے کلی گوال کیمپ میں کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے خلاف سرچ آپریشن کیا ہے۔

ایف سی کی پریس ریلیز کے مطابق فائرنگ کے تبادلے میں ٹی ٹی پی کے شدت پسند نے گھیرے میں آنے پر خود کو دھماکے سے اڑا دیا۔

کارروائی کے دوران ٹی ٹی پی کے خفیہ ٹھکانے سے بھاری مقدارمیں دھماکہ خیزمواد اور اسلحہ برآمد ہوا ہے۔

اسی بارے میں