مہمند ایجنسی: کان کے حادثے میں دس کان کن ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption مہمند ایجنسی میں سنگ مر مر کے کئی کان پائی جاتی ہیں

پاکستان کے قبائلی علاقے مہمند ایجنسی میں حکام کا کہنا ہے کہ سنگ مر مر کی ایک کان میں حادثے سے دس مزدور ہلاک ہوگئے ہیں۔

پولیٹکل انتظامیہ مہمند کے ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ یہ واقعہ سنیچر کو مہمند ایجنسی کے تحصیل صافی میں خانقاہ پہاڑ کے مقام پر پیش آیا۔

انھوں نے کہا کہ مزدور سنگ مر مر کی ایک کان سے سنگ مر مر نکال کر ٹرکوں میں ڈال رہے تھے کہ اس دوران اچانک کان بیٹھ گئی، جس سے وہاں موجود کم سے کم دس مزدور ملبے تلے دب گئے۔

حکام کے مطابق اس واقعہ میں دس مزدور ہلاک ہوئے ہیں جن میں سے پانچ کی لاشیں نکالی جا چکی ہیں جبکہ پانچ لاشیں ابھی تک ملبے تلے دبی ہوئی ہیں۔

جائے وقوعہ پر موجود پولیٹکل انتظامیہ کے ایک اہلکار مراد نے بتایا کہ جس وقت کان گری اس وقت وہاں دو ٹرک بھی کھڑے تھے جس میں سنگ مرمر ڈالا جا رہا تھا۔

انہوں نے کہا کہ کان بیٹھنے سے ٹرک اور اس کے ڈرائیور اور کنڈیکٹر بھی ملبے تلے آگئے۔ ان کے مطابق پتھر لگنے سے مرنے والے افراد کی لاشیں بری طرح مسخ گئی ہیں جبکہ ان کی شناخت ان کی جوتوں اور کپڑوں سے کی گئی۔

مرنے والوں میں ٹرک کے ڈرائیور، کلئینر اور دیگر مزدور شامل ہیں

اہلکار نے مزید بتایا کہ لاشیں نکالنے کے لیے بھاری مشنری سے ملبہ ہٹانے کا کام جاری ہے اور ہلاک ہونے والے تمام افراد کا تعلق مہمند ایجنسی سے ہے۔

خیال رہے کہ مہمند ایجنسی میں سنگ مر مر کی کئی کان پائی جاتی ہیں۔ ان کانوں سے ہر سال ٹنوں کے حساب سے ماربل نکلا جاتا ہے۔

اکثر اوقات دیکھا گیا ہے کہ ان کانوں میں حفاظتی اقدامات کا زیادہ خیال نہیں رکھا جاتا جس کی وجہ سے ان پہاڑوں میں ایسے واقعات پیش آتے رہتے ہیں۔

اسی بارے میں