بلوچستان میں متعدد مشتبہ شدت پسندگرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پنجپائی کے علاقے میں شدت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع تھی

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دو مختلف علاقوں میں حکام کے مطابق سیکورٹی فورسز کی کاروائیوں کے دوران ایک مبینہ خود کش حملہ آور سمیت متعدد مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

کوئٹہ میں پولیس کے ذرائع کے مطابق شہر سے شمال مغرب میں واقع پنجپائی کے علاقے میں شدت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع تھی۔

ذرائع نے بتایا کہ حساس اداروں کے اہلکاروں نے پنجپائی میں گلستان جنکشن چوک کے علاقے میں چھاپہ مار کر ایک گاڑی کو تحویل میں لینے کے علاوہ ایک خود کش بمبار کو گرفتار کر لیا۔

گرفتاری کے بعد خود کش حملہ آور کو تحقیقات کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا۔

بم ڈسپوزل اسکواڈ کے عملے کو طلب کرکے گاڑی میں نصب دھماکہ خیز مواد کو ناکارہ بنا دیا گیا۔

ذرائع نے بتایا کہ گرفتار ملزم سے تفتیش جاری ہے لیکن ابتدائی تفتیش کے مطابق بارود سے بھری گاڑی کو کوئٹہ میں تخریب کاری کے لیے استعمال کیا جانا تھا۔

پولیس کے ذرائع نے بتایا کہ ضلع پشین کے مختلف علاقوں میں چھاپہ مار کر بعض شدت پسندوں کو گرفتار کر لیا گیا۔

پولیس کے مطابق گرفتار افراد کا تعلق تحریک طالبان پاکستان سے بتایا جاتا ہے۔ گرفتار افراد کی تعداد کے بارے میں نہیں بتایا گیا تاہم ان کی تحویل سے کلاشنوف، ایک ایل ایم جی، 8شاٹ گن اور تھری ناٹ تھری رائفلیں بھی بر آمد کر لی گئی ہیں۔

علاوہ ازیں فرنٹیئرکوربلوچستان نے گلستان کے علاقے کلی اُمہ خان میں سرچ آپریشن کے دوران بھاری مقدارمیں اسلحہ و بارود اور د ھماکہ خیز مواد سے بھری ایک سوزوکار برآمد کرلی۔ ایف سی کے پریس ریلیز کے مطابق تحویل میں لی گئی گاڑی سے بر آمد ہونے والے اسلحہ اور مواد میں 10عدد آر پی جی سیون، 27 عدد ڈیٹو نیٹر ، 03عدد ہینڈ گرنیڈ، 300 عدد دھماکہ خیز مواد فٹیڈ بکس وغیرہ شامل تھے۔

اسی بارے میں