نو ہزار کلو کچھوؤں کا گوشت سمگل کرنے کی کوشش ناکام

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption محکمہ جنگلی حیات کے مطابق ایک کچھوے کے شکار پر ڈیڑھ لاکھ روپے جرمانہ ہے

کراچی میں کسٹم حکام نے کچھوؤں کا نو ہزار کلو گرام خشک گوشت برآمد کر لیا ہے جو چین اور ہانگ کانگ سمگل کیا جارہا تھا۔

کسٹم کے ایڈیشنل کلیکٹر عرفان جاوید کا کہنا ہے کہ ایک نجی کمپنی نے کنٹینر کی بکنگ کرائی تھی اور بتایا تھا کہ اس میں خشک مچھلی ہے۔ انھوں نے کہا کہ شبہ ہونے پر محکمہ جنگلی حیات کی مدد حاصل کی گئی جنہوں نے تصدیق کی کہ یہ کچھوؤں کا خشک گوشت ہے۔

محکمہ جنگلی حیات کے چیف کنزرویٹر جاوید مہر کا کہنا ہے کہ یہ گوشت تقریباً چار ہزار سے زائد کچھوؤں کو مار کر نکالا گیا ہے اور سندھ میں کچھوے ان جانداروں میں شامل کیے جاتے ہیں جن کی نسل کو خطرہ لاحق ہے۔

نجی شپنگ کمپنی کے خلاف کسٹم اور محکمہ جنگلی حیات کے قوانین کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ محکمہ جنگلی حیات کے مطابق ایک کچھوے کے شکار پر ڈیڑھ لاکھ روپے جرمانہ ہے۔

محکمہ جنگلی حیات کے چیف کنزرویٹر جاوید مہر کا کہنا ہے کہ کچھوے کے بےدریغ شکار کی وجہ سے پانی کی بیماریوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ عملے کی کمی کی وجہ سے دریائے سندھ کے دونوں کناروں اور نالوں کی چپے چپے پر نگرانی ممکن نہیں اس لیے لوگوں میں شعور لانا ہوگا۔

اسی بارے میں