ڈیرہ اسمٰعیل خان: صوبائی وزیر کے گھر پر بم حملہ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption علی امین نے کہا کہ ان کے مکان کے سامنے کے حصے میں پولیس اہلکار موجود ہوتے ہیں لیکن یہ حملہ عقبی جانب سے کیا گیا

خیبر پختونخوا کے جنوبی ضلع ڈیرہ اسماعیل خان میں صوبائی وزیر مال علی امین گنڈہ پور کے مکان پر نامعلوم افراد نے دستی بم پھینکا، البتہ اس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

ضلعی پولیس افسر صادق حسین نے بی بی سی کو بتایا کہ پولیس لائن روڈ پر واقع پاکستان تحرک انصاف کے صوبائی وزیر کے آبائی مکان کے عقبی جانب سے دستی بم پھینکا گیا۔

انھوں نے کہا کہ حملہ آور موٹر سائیکل پر سوار تھے اور انھوں نے دستی بم مکان کے صحن میں پھینکنے کی کوشش کی لیکن بم مکان کے ساتھ ملحق ملازمین کے کمروں کی چھت پر گر گیا۔

پولیس کے مطابق اس حملے میں کسی جانی یا مالی نقصان کی اطلاع نہیں ہے۔

صوبائی وزیر مال علی امین گنڈہ پور کا یہ آبائی مکان ہائی کورٹ کی عمارت اور کینٹ پولیس تھانے کے قریب واقع ہے۔

صوبائی وزیر مال علی امین گنڈہ پور نے مقامی صافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ دیگر سیاست دانوں کی طرح انھیں بھی خطرات لاحق ہیں اور اس کے لیے ان کے ساتھ مکمل سکیورٹی موجود ہوتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس وقت وہ اپنے خاندان کے ہمراہ پشاور میں مقیم ہیں، اور وہ نہیں کہہ سکتے کہ یہ حملہ کس نے کیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ ان کے مکان کے سامنے کے حصے میں پولیس اہلکار موجود ہوتے ہیں لیکن یہ حملہ عقبی جانب سے کیا گیا۔

یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ اس حملے کی وجوہات کیا تھیں۔ پشاور سمیت خیبر پختونخوا کے دیگر علاقوں میں اس طرح کے دھماکے ڈرانے دھمکانے کے لیے یا بھتہ وصول کرنے کے لیے کیے جاتے ہیں۔

ڈیرہ اسماعیل خان میں اکتوبر 2013 میں پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی وزیر قانون اسرار اللہ گنڈہ پور کو عید کے روز ایک خود کش حملے

میں ہلاک کر دیا گیا تھا۔ اسی طرح ہنگو میں تحریک انصاف کے رکن صوبائی اسمبلی فرید خان کو بھی نا معلوم افراد نے فائرنگ کرکے ہلاک کر دیا تھا۔

عوامی نیشنل پارٹی اور دیگر جماعتوں سے وابستہ سیاست دانوں پر بھی متعدد حملے ہو چکے ہیں۔

اسی بارے میں