بلوچستان میں فرنٹیئر کور کی کارروائی میں تین افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فرنٹیئر کور کے ایک اور بیان کے مطابق ڈیرہ مرادجمالی میں سرچ آپریشن کرتے ہوئے بڑی تعداد میں ایمونیشن، بھاری اورخودکار اسلحہ برآمد کرلیاگیا

پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں فرنٹیئر کور نے تین افراد کو ایک سرچ آپریشن کے دوران فائرنگ کے تبادلے میں ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

جمعہ کو کوئٹہ میں فرنٹیئر کور کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق یہ سرچ آپریشن بولان کے علاقے مچھ میں مبینہ طور پر بھتہ خوری اور اغوا برائے تاوان کے واقعات میں ملوث گروہ کے خلاف کیا گیا۔

بیان میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ سرچ آپریشن کے دوران فائرنگ کے تبادلے میں 3 افراد ہلاک ہوگئے جن کے قبضے سے3 عدد خودکار ہتھیار بمعہ ایمونیشن اور دستی بم برآمد کیاگیا۔

بیان کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں ایک انتہائی مطلوب ملزم بھی ماراگیا ہے جوزیارت میں قائد اعظم ریذیڈنسی، مچھ کے علاقے میں ٹرینوں پر راکٹ حملے اور دیگر جرائم میں حکومت کو مطلوب تھا۔

فرنٹیئر کور کے ایک اور بیان کے مطابق ڈیرہ مرادجمالی میں سرچ آپریشن کرتے ہوئے بڑی تعداد میں ایمونیشن، بھاری اورخودکار اسلحہ برآمد کرلیاگیا۔

برآمد کیے جانے والے اسلحہ اور ایمونیشن میں اینٹی ایئر کرافٹ گن، 22 عدد ایس ایم جیز،2 عدد جی تھری رائفلز اور دیگر ہتھیار شامل تھے ۔

اس کارروائی کے دوران بلوچستان بھر میں غیر قانونی اسلحہ پہنچانے والے ا ایک اسلحہ اسمگلر کو بھی گرفتار کرلیاگیا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ ایک اورکاروائی میں پنجگور کے نواحی علاقے میں سرچ آپریشن کے دوران ایک قوم پرست عسکریت پسند تنظیم سے تعلق رکھنے والے ایک شخص کو گرفتار کر لیا گیا۔

اسی بارے میں