سندھ اور پنجاب پولیس کا مشترکہ آپریشن، مغوی پولیس اہلکار بازیاب

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption چھ پولیس اہلکاروں کو ڈاکؤوں کے تین گروہوں نے اغوا کیا ہے: پولیس

پاکستان کے صوبہ پنجاب اور سندھ پولیس نے مشترکہ آپریشن کے دوران سنیچر کی شب اِغوا ہونے والے سات پولیس اہلکاروں کو بازیاب کروالیا ہے جبکہ ڈاکؤوں کے خلاف اب بھی کارروائی جاری ہے۔

پاکستان کے سرکاری ٹی وی کا کہنا ہے کہ مغوی پولیس اہلکاروں کی بازیابی کے لیے فضائی اور زمینی کارروائی میں سندھ اور پنجاب پولیس کے 2000 اہلکاروں اور کمانڈوز نے حصہ لیا۔

پولیس اہلکاروں کو سندھ اور پنجاب کے سرحدی علاقوں میں سرچ آپریشن کے دوران سندھ کی حدود سے بازیاب کروایا گیا ہے۔

بتایا گیا ہے کہ بازیاب ہونے والے تمام پولیس اہلکار تھانہ ماچھکہ پہنچایا گیا جبکہ آپریشن کے دوران ڈاکووں کا جانی نقصان بھی ہوا۔ تاہم ابھی تک کسی ڈاکو کی گرفتاری کے بارے میں کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی۔

خیال رہے کہ پاکستان کے صوبہ پنجاب کے پولیس حکام کے مطابق ضلع رحیم یار خان کی ایک پولیس چوکی پر سنیچر اور اتوار کی رات ڈاکؤوں نے حملہ کیا اور سات پولیس اہلکاروں کو اغوا کر لیا تھا۔

ماچھکہ پولیس اسٹیشن کے ایس ایچ او نے بی بی سی کو بتایا کہ پولیس اہلکاروں کا اغوا سندھ میں حالیہ عرصے میں جرائم پیشہ عناصر کے خلاف جاری آپریشن کا ردِعمل ہے۔

خیال رہے کہ پاکستان کے مقامی میڈیا نےتین روز پہلے بھی خبر دی تھی کہ سندھ کے علاقے گھوٹکی میں ڈاکوؤں کے حملے میں ایک ایس ایچ او ہلاک اور دو پولیس افسران زخمی ہوگئے تھے۔

اسی بارے میں