کرم: فٹ بال میچ پر خودکش حملے کی کوشش ناکام، چار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اہلکار کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں کو جب روکا گیا تو انھوں نے فٹ بال کے میدان سے باہر ہی اپنے آپ کو دھماکے سے اڑا دیا

پاکستان کے قبائلی علاقے کرم ایجنسی کی پولیٹیکل انتظامیہ کے ایک اہلکار کے مطابق فٹ بال میچ کے دوران خودکش دھماکوں اور فائرنگ سے دو حملہ آوروں سمیت چار افراد ہلاک اور ایک شخص رخمی ہوگیا ہے۔

حکام کے مطابق خودکش حملہ آوروں نے گورنمنٹ ہائی سکول علی زئی کے گراؤنڈ میں جاری فٹ بال میچ کے دوران عقبی راستے سے گراؤنڈ میں داخل ہونے کی کوشش کی، جنھیں لیویز اہلکاروں نے روکا۔

اس دوران ان کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ بھی ہوا اور بعد ازاں دونوں حملہ آوروں نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا جس سے ایک سول ڈیفنس کا اہلکار اور ایک عام شہری ہلاک ہوگئے۔

اہلکار کے مطابق فٹ بال میچ مقامی ٹیموں کے درمیان ہو رہا تھا اور اس وقت لوگوں کی بڑی تعداد میچ دیکھنے کے لیے آئی ہوئی تھی۔

حکام کے مطابق یہ حملہ پاراچنار سے 55 کلومیٹر دور ایک چھوٹے سے گاؤں علی زئی میں کیا گیا۔

انھوں نے بتایا کہ یہ واقعہ بدھ کی شام پونے سات بجے پیش آیا۔

اہلکار نے مزید بتایا کہ اس حملے کے بعد کرم ہائی وے بند کر دی گئی ہے۔

انھوں نے کہا کہ علی زئی سے قریب ترین ہسپتال 35 کلومیٹر کے فاصلے پر ہے۔

اسی بارے میں