وزیراعظم نواز کے خلاف 24 سالہ پرانے کیس کی سماعت

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption وزیراعظم نواز شریف کی نااہلی کے لیے دائر درخواست 1991 میں دائر کی گئی تھی

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس منظور اے ملک نے وزیراعظم نواز شریف کو نااہل قرار دینے کی درخواست پر کارروائی کے لیے فل بینچ تشکیل دے دیا ہے۔

نواز شریف کی نااہلی کی درخواست پر سماعت کے لیے پانچ رکنی فل بینچ تشکیل دے دیا گیا ہے اور لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس فرخ عرفان خان اس بینچ کے سربراہ ہوں گے۔

لاہور ہائی کورٹ کا پانچ رکنی فل بینچ آٹھ مئی کو درخواست پر اپنی کارروائی کا آغاز کرے گا۔

لاہورہائی کورٹ کے چیف جسٹس نے فل بینچ کی تشکیل کا حکم مقامی شہری علی عمران کی جانب سے بیرسٹر جاوید اقبال جعفری کے توسط سے دائر درخواست پر دیا۔

وزیراعظم نواز شریف کی نااہلی کے لیے درخواست 1991 میں دائر کی گئی اور یہ گذشتہ 24 برسوں میں لاہور ہائی کورٹ کے مختلف ججوں کے روبرو زیر سماعت رہی۔

گذشتہ ماہ لاہور ہائی کورٹ کے دو رکنی بینچ نے درخواست پر سماعت کی تھی جس کے بعد یہ معاملہ چیف جسٹس لاہو رہائی کورٹ کو بڑے بنچ کی تشکیل کے لیے بھجوا دیا گیا تھا۔

لاہور ہائی کورٹ پانچ رکنی بینچ کے دیگر ارکان میں جسٹس قاسم خان ، جسٹس عائشہ اے ملک، جسٹس فیصل زمان خان اور جسٹس وقاص رؤف مرزا شامل ہیں۔

درخواست میں الزام عائد کیا گیا کہ وزیراعظم نواز شریف نے بیرون ملک غیر قانونی اثاثے قائم کیے ہیں اور آئین کے آرٹیکل 62 اور 63 پر پورا نہیں اترتے ہیں اس لیے ان کو وزارت عظمیٰ کے منصب کے لیے نااہل قرار دیا جائے۔

اسی بارے میں