نلتر حادثے پر پاکستان میں سوگ، زخمی اور لاشیں اسلام آباد منتقل

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption ہیلی کاپٹر لینڈنگ کے وقت آرمی سکول کے احاطے میں گرا جس کے بعد اس میں آگ لگ گئی

پاکستان کے شمالی علاقے گلگت بلتستان میں ہیلی کاپٹر کے حادثے میں غیر ملکی سفیروں سمیت سات افراد کی ہلاکت پر سنیچر کو پاکستان بھر میں یومِ سوگ منایا جا رہا ہے۔

نلتر کے مقام پر جمعے کو پیش آنے والے اس حادثے میں ناروے اور فلپائن کے سفیر اور ملائیشیا اور انڈونیشیا کے سفیروں کی بیگمات کے علاوہ ہیلی کاپٹر کے دو پائلٹ اور ایک ٹیکنیشن ہلاک ہوگیا تھا۔

وزیرِ اعظم پاکستان نواز شریف نے اس افسوس ناک واقعے پر ایک دن کے سوگ کا اعلان کیا تھا جس کے بعد سنیچر کو ایوان صدر ، پارلیمنٹ ہاؤس ، سپریم کورٹ اور وزیراعظم ہاؤس سمیت سرکاری عمارتوں پر قومی پرچم سرنگوں ہے۔

اس حادثے میں ہلاک ہونے والے چاروں غیر ملکی شخصیات کی میتیں بھی سنیچر کو تین ہیلی کاپٹروں کے ذریعے راولپنڈی کے نور خان ایئربیس منتقل کی گئی ہیں جہاں سے انھیں سی ایم ایچ لے جایا گیا ہے۔

پاکستان کے سیکریٹری خارجہ اعزاز چوہدری نے پی ٹی وی کو بتایا ہے کہ ہلاک شدگان کے لواحقین کی پاکستان آمد کا سلسلہ جاری ہے اور ان میتوں کو دو سے تین دن میں خصوصی پروازوں کے ذریعے ان کے آبائی وطن بھجوایا جائے گا۔

پی ٹی وی کے مطابق وزیرِ اعظم کی ہدایات پر ان میتوں کے ساتھ وفاقی کابینہ کے ارکان احسن اقبال ملائیشیا اور انڈونیشیا، خرم دستگیر خان فلپائن اور عبدالقادر بلوچ ناروے جائیں گے۔

پاکستانی فوج کے ایوی ایشن شعبے سے تعلق رکھنے والے پائلٹوں میجر التمش ریاض اور میجر وسیم فیصل اور ٹیکنیشن نائب صوبیدار ذاکر کی نمازِ جنازہ بھی سنیچر کو گلگت میں فوجی بیس پر ادا کی گئی جس کے بعد ان کی میتوں کو آبائی علاقوں کو روانہ کر دیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption زخمی ہونے والے افراد کو بھی گلگت میں فوجی ہسپتال میں ابتدائی طبی امداد کے بعد مزید علاج کے لیے اسلام آباد لایا جا رہا ہے

حادثے میں زخمی ہونے والے افراد کو بھی گلگت میں فوجی ہسپتال میں ابتدائی طبی امداد کے بعد مزید علاج کے لیے سی 130 طیارے کے ذریعے اسلام آباد لایا گیا ہے۔

سیکریٹری خارجہ اعزاز چوہدری نے جمعے کی شب پریس کانفرنس میں بتایا تھا کہ اس سلسلے میں اسلام آباد میں الشفا انٹرنیشنل اور پمز کے علاوہ کھاریاں میں فوج کے برن سینٹر میں انتظامات مکمل کر لیے گئے ہیں جہاں ان افراد کو مکمل طبی سہولیات فراہم کی جائیں گی۔

ان کا کہنا تھا کہ زخمی ہونے والوں میں انڈونیشیا، پولینڈ، ہالینڈ اور ملائیشیا کے سفرا شامل ہیں جن میں سے انڈونیشیا کے سفیر کی حالت تشویش ناک ہے کیونکہ ان کا 75 فیصد بدن جل چکا ہے۔

اعزاز چوہدری کا یہ بھی کہنا تھا کہ پاکستانی فوج کا ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر تکنیکی خرابی کی وجہ سے حادثے کا شکار ہوا اور یہ کسی قسم کی دہشت گردی کی وارادات نہیں۔

انھوں نے بتایا تھا کہ ہیلی کاپٹر کا بلیک باکس حاصل کر لیا گیا ہے اور حادثے کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

تکنیکی خرابی

پاک فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان کا کہنا ہے کہ نلتر میں حادثے کا شکار ہونے والا ہیلی کاپٹر تکنیکی خرابی کے باعث لینڈنگ سے پہلے بے قابو ہوگیا تھا۔

سنیچر کو پی ٹی وی نیوز سے گفتگو میں پاک فضائیہ کے سربراہ نے کہا کہ تحقیقات کے بعد حادثے کے اصل وجوہات کا تعین کیا جاسکے گا۔

انہوں نے کہا کہ بیس کمانڈر خود ہیلی کاپٹر کی لینڈنگ کا مشاہدہ کر رہے تھے اور جائے حادثہ سے زخمی افراد کی بروقت منتقلی سے بہت سے جانیں بچانے میں مدد ملی ہے۔

ایئرچیف نے کہا کہ ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر معمول کی پرواز پر تھا اور پائلٹ عمدہ پیشہ ورانہ مہارت رکھتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ عالمی برادری نے سانحہ نلتر پر پاکستان کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔

خیال رہے کہ پاکستان کی وزارتِ خارجہ کی جانب سے جمعے کو 30 سے زیادہ غیر ملکی سفیروں اور ان کے اہل خانہ کو تین دن کے دورے پر سی ون 30 طیارے سے گلگت لے جایا گیا تھا جہاں سے انھیں ہیلی کاپٹروں میں نلتر لے جایا جا رہا تھا کہ ایک ہیلی کاپٹر گر کر تباہ ہو گیا تھا۔

حادثے کا شکار ہونے والے ہیلی کاپٹر پر 11 غیر ملکی اور چھ پاکستانی سوار تھے۔

اظہارِ افسوس

سرکاری ریڈیو کے مطابق سنیچر کو وزیراعظم نواز شریف نے ناروے کی وزیراعظم ارنا سولبرگ کو ٹیلی فون کیا اور ان کے ملک کے سفیر کی ہلاکت پر تعزیت کی۔

ان کا کہنا تھا کہ پوری پاکستانی قوم اس حادثے پر دل شکستہ ہے اور ناروے کے عوام کے غم میں برابر کی شریک ہے۔

میاں نوازشریف نے ملائیشین ہم منصب نجیب رزاق کو بھی ٹیلی فون کیا اور نلتر ہیلی کاپٹر حادثے میں ملائیشیا کے سفیر کی اہلیہ کی ہلاکت پر تعزیت کی۔

اسی بارے میں