میٹروپولیٹن پولیس کے عہدے دار اسلام آباد میں

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption خیال کیا جاتا ہے کہ رچرڈ والٹن اسلام آباد میں پاکستانی حکام سے عمران فاروق قتل کیس کے بارے میں بات کی ہے

لندن کی میٹروپولیٹن نے بتایا ہے کہ میٹرو پولیٹن پولیس کے انسدادِ دہشت گردی شعبے کے سربراہ رچرڈ والٹن نے اسلام آباد میں پاکستانی حکام سے مختلف کیسوں میں جاری تحقیقات کے بارے میں بات کی ہے۔

لندن پولیس کے ترجمان نے بی بی سی کے نامہ نگار فراز ہاشمی سے بات کرتے ہوئے اس بات کی تصدیق کی کہ لندن پولیس کے سربراہ منگل کے روز اسلام آباد میں پاکستانی حکام سے ملے ہیں، تاہم انھوں نے ان کیسوں کی نشان دہی کرنے سے معذرت کی، جن کے بارے میں وہ پاکستانی حکام سے بات چیت کر رہے ہیں۔

ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس کے بارے میں جاری تحقیقات کے بارے میں ایک سوال پر انھوں نے کہا کہ رچرڈ والٹن کئی معاملات پر بات کریں گے۔

متحدہ قومی موومنٹ کے سربراہ الطالف حسین کے خلاف منی لانڈرنگ کیس کے بارے میں انھوں نے کہا کہ ایک 64 سالہ شخص سے پوچھ گچھ کی گئی ہے جس کا نام ایف سے شروع ہوتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ اب تک اس کیس میں چھ اشخاص کو گرفتار کیا جا چکا ہے جو بعد میں ضمانت پر رہا کر دیے گئے۔

یاد رہے کہ گذشتہ ماہ پاکستانی وزیرِ داخلہ چوہدری نثار علی خان اور برطانوی ہائی کمشنر کی اسلام آباد میں ملاقات ہوئی تھی، جس کے بعد چوہدری نثار نے کہا تھا کہ ڈاکٹر عمران فاروق قتل کے مقدمے میں پاکستان میں گرفتار ہونے والے کسی ملزم برطانیہ کے حوالے کیا گیا تو اس کے بدلے میں برطانیہ کو بھی مطلوب افراد پاکستان کے حوالے کرنا ہوں گے۔

چوہدری نثار علی خان نے یہ بھی کہا تھا کہ ڈاکٹر عمران فاروق قتل کے مقدمے میں تینوں افراد کو پاکستانی خفیہ اور سکیورٹی اداروں نے حراست میں لیا ہے، جن میں سید محسن علی، کاشف خان اور معظم علی شامل ہیں۔

خیال رہے کہ الطاف حسین کے خلاف منی لانڈرنگ کیس بھی جاری ہے جس میں وہ ضمانت پر ہیں۔

اسی بارے میں