پولیس کی فائرنگ سے دو شہری ہلاک، پانچ پولیس اہلکار گرفتار

کراچی پولیس تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گرفتار کیے جانے والوں میں دہ ہیڈ کانسٹیبل اور تین سپاہی ہیں

کراچی میں گذشتہ شب دو بجے کے قریب پولیس اہلکاروں کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والے دو شہریوں کے قتل الزام میں دو ہیڈ کانسٹیبل سمیت پانچ پولیس اہلکاروں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

ایس ایس پی ضلع شرقی کراچی پیر محمد شاہ نے بی بی سی کو بتایا کہ گذشتہ رات پولیس کو اطلاع ملی کہ شہیدِ ملت روڈ پر تین موٹر سائیکلوں پر سوار چھ افراد لوٹ مار کررہے ہیں ہیں جس کے بعد پولیس نے ٹیپوسلطان روڈ کے سگنل پر ناکہ لگا دیا۔

رات دو سے تین بجے کے درمیان وہاں سے ایک موٹر سائیکل پر سوار دو افراد گزرے جنہیں روکا گیا مگر وہ نہیں رکے۔ اس دوران پولیس کی ایک گولی موٹر سائیکل پر سوار پیچھے بیٹھے شخص کو لگنے کے بعد اس کے جسم سے پار ہوگئی اور موٹر سائیکل چلانے والے کو جا لگی جس سے دونوں ہی ہلاک ہوگئے۔

جناح ہسپتال کی ترجمان ڈاکٹر سیمی جمالی کے مطابق مرنے والے دونوں افراد کو مردہ حالت میں ہسپتال لایا گیا تھا جن میں سے ایک شخص کو لگنے والی گولی اس کے جسم کے ۤآر پار ہوگئی تھی جب کہ دوسرے کے جسم سے ایک گولی ملی ہے۔

ایس ایس پی ضلع شرقی کے مطابق انھوں نے پانچوں پولیس اہلکاروں کو گرفتار کرلیا ہے جن میں دوہیڈ کانسٹیبل اور تین سپاہی شامل ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ مرحومین کے لواحقین ابھی تدفین میں مصروف ہیں جب وہ آجائیں گے تو ان کے مدعیت میں مقدمہ بھی ضرور درج کیا جائے گا۔

انھوں نے مزید تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ تینوں سپاہیوں نے اپنی طرف سے تو ہوائی فائرنگ کی تھی لیکن ایک گولی غلطی سے سیدھی چل گئی۔

ایس ایس پی محمد شاہ کے مطابق یہ تربیت میں کمی کا نتیجہ ہے اور اس پر قتلِ خطاء کا مقدمہ بنتا ہے۔

مرنے والے افراد کے نام دانش میمن اور محمد علی میمن تھے۔

اسی بارے میں