علی امین گنڈا پور نے خود کو پولیس کے حوالے کردیا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption خبرپختوخوا کے صوبائی وزیر مالیات علی امین گنڈا پور کا شمار تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے قریبی ساتھیوں میں ہوتا ہے

پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کے جنوبی ضلع ڈیرہ اسمعیل خان میں پولیس کا کہنا ہے کہ بیلٹ بکس لے جانے کے الزام میں مقدمے کے اندراج کے بعد تحریک انصاف کے صوبائی وزیر مالیات علی امین گنڈا پور نے خود کو پولیس کے حوالے کردیا ہے۔

ڈیرہ شہر کے تھانہ صدر کے ایک پولیس اہلکار تیمور نے بی بی سی کو تصدیق کی کہ صوبائی وزیر مال علی امین گنڈا پور نے پیر کی شام اعلیٰ پولیس اہلکاروں کے سامنے گرفتاری پیش کردی ہے۔

پولیس اہلکار نے بتایا کہ دو دن پہلے بلدیاتی انتخابات کے روز صوبائی وزیر علی امین گنڈا پور پر الزام لگایا گیا تھا کہ وہ ڈیرہ اسماعیل خان کے علاقے ہمت میں ایک پولنگ سٹیشن سے بیلٹ بکس اٹھا کر اپنے گاڑی میں لے گئے تھے جس کے بعد ان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا تھا۔

مقامی صحافیوں کا کہنا ہے کہ صوبائی وزیر کے خلاف دو مقدمات درج کئے گئے ہیں جس میں ایک مقدمہ میں ان پر بیلٹ بکس لے جانے کا الزام ہے جبکہ دوسرے مقدمے میں ان پر کارِ سرکار میں مداخلت کے الزامات لگائے گئے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ صوبائی وزیر نے الیکشن کے روز تھانہ صدر کے ایس ایچ او کو مبینہ طورپر گربیان سے پکڑا کر گھسٹا تھا جس پر ان کے خلاف پولیس کی مدعیت میں مقدمہ درج کرلیا گیا تھا۔

پولیس ذرائع کے مطابق ملزم صوبائی وزیر کو گرفتاری کے بعد کسی نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔ تاہم مقامی صحافیوں کے مطابق غالب امکان یہی ہے کہ صوبائی وزیر کو پولیس کے ریسٹ ہاوس میں منتقل کرلیا گیا ہے لیکن سرکاری طورپر اس ضمن میں کچھ نہیں کہا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption علی امین گنڈا پور پر الزام تھا کہ وہ ایک پولنگ سٹیشن سے بیلٹ بکس اٹھا کر اپنے گاڑی میں لے گئے تھے

اس سے پہلے پیر کی شام جب پولیس کی بھاری نفری افسران کے ہمراہ صوبائی وزیر کو گرفتار کرنے کےلیے ان کی رہائیش گاہ پہنچی تو تقریباً چار گھنٹے تک پولیس اہلکار ان کے گھر کے سامنے انتظار کرتے رہے۔ اس دوران تحریک انصاف کے کارکنوں کی ایک بڑی تعداد بھی وہاں پہنچی اور ایک وقت میں علاقے میں کشیدگی کی سی صورتحال پیدا ہوگئی تھی۔

تاہم بعد میں صوبائی وزیر نے خود جاکر پولیس کو گرفتاری پیش کردی۔ یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ صوبائی وزیر کے خلاف مقدمات دو دن پہلے درج کرائے گئے تھے لیکن انھوں نے گرفتاری پیر کی شام پیش کی۔

اس سے پہلے ملک کے بعض سیاسی جماعتوں کی جانب سے تحریک انصاف کی صوبائی حکومت پر تنقید بھی کی جارہی تھی کہ اے این پی کے رہنما کو بغیر کسی وجہ کے گرفتار کیا گیا جبکہ پی ٹی آئی کے صوبائی وزیر کے خلاف مقدمات درج ہوئے دو دن ہوگئے ہیں لیکن انھیں ابھی تک گرفتار نہیں کیا جارہا۔

ڈیرہ اسمعیل خان سے تعلق رکھنے والے صوبائی وزیر مالیات علی امین گنڈا پور کا شمار تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے قریبی ساتھیوں میں ہوتا ہے۔ گزشتہ سال اسلام آباد میں جب پی ٹی آئی کا دھرنا جاری تھا تو علی امین گنڈا پور اکثر اوقات عمران خان کے ساتھ کنٹینر میں دیکھے جاتے تھے۔

اسی بارے میں