کراچی سمیت سندھ کے زیادہ تر علاقوں میں بجلی بحال

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption منگل کی رات نو بجے سے بجلی غائب ہونا شروع ہوئی اور چند منٹوں میں شہر کے بیشتر علاقے تاریکی میں ڈوب گئے

کراچی میں بجلی کی فراہمی کے ذمہ دار نجی ادارے کے الیکٹرک نے کہا ہے کہ شہر میں بجلی کی ترسیل کے نظام میں خرابی کی وجہ سے پیدا ہونے والے بجلی کے بحران پر بڑی حد تک قابو پالیا گیا ہے اور زیادہ تر متاثرہ علاقوں میں بجلی کی فراہمی بحال کردی گئی ہے۔

کے الیکٹرک کے ایک ترجمان نے بی بی سی کو بتایا کہ ’صورتحال کافی حد تک معمول پر آگئی ہے کیونکہ ہمارا نیشنل گرڈ کے ساتھ لنک بھی بحال ہوگیا ہے۔‘

اداراے کے مطابق منگل کی رات نو بجے پہلے بن قاسم بجلی گھر کے پیداواری یونٹ کی ٹرانسمیشن لائن ٹرپ ہوئی، جس کے بعد شہر کے کئی علاقوں میں بجلی کی فراہمی بند ہوگئی تھی۔

جس کے بعد صبح ایک بجے کے قریب صوبہ سندھ کے بجلی کی سپلائی کا نظام ٹرپ ہوگیا جس کے باعث کراچی اور سندھ میں بجلی کی پیداوار اور ترسیل کا نظام ٹھپ ہوگیا اور اندرون سندھ اور بلوچستان کے کئی علاقوں میں بھی بجلی کی سپلائی بند ہوگئی تھی۔

ادھر حیدرآباد سمیت اندرون سندھ کو بجلی فراہم کرنے والی سرکاری کمپنی حیسکو کا کہنا ہے کہ بجلی کے بریک ڈاؤن سے صوبے کے 14 ضلعوں کے 68 گرڈ سٹیشن بند ہوگئے تھے جن کی بحالی کا کام جاری ہے۔

اس سے قبل کراچی میں حکام کے مطابق بجلی کی ترسیل کے نظام میں خرابی کے باعث بجلی کا بحران پیدا ہوگیا تھا اور شہر کی نصف سے زیادہ آبادی پچھلے 12 گھنٹوں سے بجلی سے محروم ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption لانڈھی، کورنگی، اورنگی ٹاؤن، گلستان جوہر، نارتھ کراچی، نارتھ ناظم آباد سمیت کئی علاقوں میں اب بھی بجلی بحال نہیں ہوسکی ہے

کراچی کو بجلی فراہم کرنے والے نجی ادارے کے الیکٹرک کے ترجمان کا کہنا ہے کہ یہ بریک ڈاؤن 500 کے وی کی ٹرانسمیشن لائن میں خرابی کے باعث پیدا ہوا اور ادارے کے انجینیئرز اور افسران خرابی کو دور کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں۔

ترجمان کے مطابق متبادل ذرائع سے بجلی حاصل کرنے کی بھی کوشش کی جارہی ہے۔

شہر کے وسیع علاقوں میں منگل کی رات نو بجے سے بجلی غائب ہونا شروع ہوئی اور چند منٹوں میں شہر کے بیشتر علاقے تاریکی میں ڈوب گئے۔ شدید گرمی میں بجلی نہ ہونے کے باعث کئی علاقوں میں لوگوں نے رات سڑکوں پر گزاری۔

کے الیکٹرک کا کہنا ہے کہ بدھ کی صبح کئی علاقوں میں بجلی کی بحالی کا عمل شروع ہوگیا ہے مگر شہر کے تمام علاقوں میں بجلی کی ترسیل کی مکمل بحالی میں وقت لگے گا۔

لانڈھی، کورنگی، اورنگی ٹاؤن، گلستان جوہر، نارتھ کراچی، نارتھ ناظم آباد، محمود آباد، نیوکراچی اور جوڑیا بازارکے کئی حصوں میں اب بھی بجلی بحال نہیں ہوسکی ہے۔

دوسری طرف بدھ کی صبح سندھ کے دوسرے بڑے شہر حیدرآباد سمیت اندرون سندھ کے زیادہ تر علاقوں میں بھی بجلی کی ترسیل بند ہوگئی ہے جس کی وجہ جام شورو اور کوٹری کے بجلی گھروں میں خرابی بتائی جاتی ہے۔

یاد رہے کہ کراچی میں پچھلے ماہ شدید گرمی کی لہر نے تقریباً 13 سو لوگوں کی جان لے لی تھی جس کی ایک بڑی وجہ گرمی اور رمضان کے دوران لوڈ شیڈنگ کو قرار دیا گیا تھا۔

اسی بارے میں