محمد انور کو ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی سے ہٹا دیا گیا

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption رابطہ کمیٹی نے کارکنان سے کہا کہ وہ اب تنظیمی امور کے حوالہ سے محمد انور سے کسی قسم کا رابطہ نہ کریں

متحدہ قومی موومنٹ نے لندن میں اپنی رابطہ کمیٹی کے سینیئر رکن محمد انور کو کمیٹی کی رکنیت سے سبکدوش کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جماعت کی ویب سائٹ پر جاری کیے گئے بیان میں ان کی علیحدگی کی وجہ خرابی صحت اور مسلسل علالت بتائی گئی ہے۔

بیان کے مطابق محمد انور کو رابطہ کمیٹی سے الگ کرنے کا فیصلہ اتوار کو لندن میں کمیٹی کے سینیئر ڈپٹی کنوینر ندیم نصرت کی صدارت میں منعقدہ اجلاس میں کیا گیا۔

بیان کے مطابق رابطہ کمیٹی نے کہا کہ محمد انور نہ صرف علیل ہیں بلکہ بیماری کے سبب ان کی یاداشت بھی بری طرح متاثر ہوئی ہے اور ایک ایسے وقت میں جب ایم کیوایم، اسٹیبلشمنٹ کے براہ راست سیاسی انتقام کا نشانہ بنی ہوئی ہے ناگزیر ہے کہ رابطہ کمیٹی کا ہر رکن نہ صرف ہمہ وقت موجود رہے بلکہ ذہنی وجسمانی طور پر مکمل صحت مند بھی ہو۔

بیان کے مطابق اجلاس میں کیے گئے فیصلہ کے مطابق رابطہ کمیٹی نے محمد انور سے کہا ہے کہ وہ صحت یاب ہونے تک مکمل آرام کریں۔

رابطہ کمیٹی نے کارکنان سے یہ بھی کہا ہے کہ چونکہ اب محمد انور رابطہ کمیٹی کے رکن نہیں رہے اس لیے اب تنظیمی امورکے حوالہ سے ان سے کسی قسم کا رابطہ نہ کیا جائے۔

خیال رہے کہ 64 سالہ محمد انور کو رواں برس مارچ میں لندن میں انسداد دہشت گردی فورس کے اہلکاروں نے منی لانڈرنگ کے مقدمے میں حراست میں لیا تھا۔

پولیس نے 12 گھنٹے سے زیادہ وقت تک محمد انور کی رہائش گاہ کی تلاشی بھی لی تھی اور پھر انھیں تفتیش کے بعد رواں برس جولائی کے وسط تک کے لیے ضمانت پر رہا بھی کر دیا گیا تھا۔

اسی بارے میں