کیچ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے بلوچ شاعر ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ذرائع نے بتایا کہ دو مسلح افراد موٹر سائیکل پر وہاں آئے اور رحمت اللہ شوہاز پر فائر کھول دیا

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع کیچ میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے بلوچی زبان کے ایک شاعر کو ہلاک کر دیا ہے۔

بلوچی زبان کے شاعر پر حملے کا یہ واقعہ ضلع کیچ کے علاقے بلیدہ میں گزشتہ شب پیش آیا۔

کیچ انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق بلوچی زبان کے شاعر رحمت اللہ شوہاز معمول کے مطابق دوستوں کے ساتھ گپ شپ کے لیے گھر سے باہر نکلے تھے۔

ذرائع نے بتایا کہ دو مسلح افراد موٹر سائیکل پر وہاں آئے اور رحمت اللہ شوہاز پر فائر کھول دیا جس کے نتیجے میں وہ ہلاک ہو گئے۔

رحمت اللہ شوہاز بلوچی زبان کے شاعر ہونے کے ساتھ انٹر کالج بلیدہ میں لائبریرین بھی تھے۔

نیشنل پارٹی کے رہنما اور حکومت بلوچستان کے ترجمان جان محمد بلیدی نے رحمت اللہ شوہاز کے قتل کے واقعے کو افسوسناک قرار دیا ہے۔

جان محمد بلیدی نے ایک بیان میں کہا کہ بلوچستان میں جاری جنگ، خانہ جنگی کی جانب بڑھ رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایک ہفتے میں ضلع کیچ میں یہ چوتھا واقعہ ہے جس میں بےگناہ لوگوں کا قتل کیا گیا۔

رحمت اللہ شوہاز کے قتل کے محرکات معلوم نہیں ہوسکے اور نہ ہی تاحال کسی نے ان کو ہلاک کرنے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

ایران سے متصل ضلع کیچ کا شمار بلوچستان کے شورش زدہ علاقوں میں ہوتا ہے۔

چند روز قبل بھی ضلع کیچ میں ہونے والے دو پرتشدد واقعات میں نو افراد ہلاک ہوئے تھے جبکہ تین افراد کی تشدد زدہ لاشیں بھی ملی تھیں۔

اسی بارے میں