’گیتا ہماری بیٹی ہے، چار بھارتی خاندانوں کا دعویٰ‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گیتا اس بھارتی لڑکی کا اصلی نام نہیں ہے بلکہ یہ نام سے ايدھي فاؤنڈیشن کے بانی عبدالستار ايدھي کی اہلیہ بلقیس ايدھي نے دیا تھا

بھارت کی وزیر خارجہ سشما سوراج نے کہا ہے کہ پاکستان میں موجود بھارتی لڑکی گیتا کو وطن واپس لانے کے لیے ضروری کارروائی کی جا رہی ہے۔

سنیچر کو ٹوئٹر پر اپنے متعدد پیغامات میں بھارتی وزیر نے یہ بھی کہا کہ اب تک چار خاندانوں نے دعویٰ کیا ہے کہ گیتا ان کی گمشدہ اولاد ہے۔

پاکستان میں رہنے والی گیتا کو بجرنگی بھائی جان کی تلاش؟

10 سال سے زیادہ عرصے سے پاکستان میں فلاحی ادارے ایدھی فاؤنڈیشن کے پاس رہنے والی گیتا قوتِ گویائی اور قوتِ سماعت سے محروم ہیں۔

سشما نے اپنی پہلی ٹویٹ میں کہا کہ، ’ہم گیتا کو بھارت واپس لانے کے لیے ضروری کارروائی کر رہے ہیں۔‘

ایک اور ٹویٹ میں ان کا کہنا تھا کہ ’گذشتہ کچھ دنوں میں پنجاب، بہار، جھارکھنڈ اور اترپردیش کے چار خاندانوں نے دعوی کیا ہے کہ گیتا ان کی بیٹی ہے۔ میں متعلقہ ریاستوں کے وزرائے اعلی سے ان دعوؤں کی تصدیق کی رپورٹ دینے کی اپیل کر رہی ہوں۔‘

سشما نے ٹوئٹر پر لکھا، ’گیتا نے اشاروں میں پاکستان میں بھارتی ہائی کمشنر سے باتیں کی اور بتایا کہ وہ سات بھائی بہن ہیں۔ گیتا نے بتایا تھا کہ وہ اپنے والد کے ساتھ ایک مندر گئی تھیں، اس کے بعد اس نے ’ویشنو دیوی‘ لکھا۔ ان معلومات کی بنیاد پر براہ مہربانی گیتا کے خاندان کو ڈھونڈنے میں مدد کریں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption بھارتی وزیر نے یہ بھی کہا کہ اب تک چار خاندانوں نے دعویٰ کیا ہے کہ گیتا ان کی گمشدہ اولاد ہے۔

بھارتی وزیرِ خارجہ کی ہدایت پر ہی پاکستان میں بھارت کے ہائی کمشنر ٹي سي اے راگھون اور ان کی اہلیہ نے منگل کو گیتا سے ملاقات کی تھی۔

وزیر خارجہ نے بتایا تھا کہ بھارتی ہائی کمشنر کا کہنا ہے کہ گیتا بھارتی ہیں۔

خیال رہے کہ ایدھی فاؤنڈیشن کی انتظامیہ میں شامل فیصل ایدھی نے بی بی سی اردو کو بتایا تھا کہ بھارتی حکام سنہ 2013 میں بھی گیتا سے مل چکے ہیں۔

گیتا کی کہانی سلمان خان کی حال ہی میں آنے والی فلم بجرنگی بھائی جان کے کردار منّی کی کہانی سے ملتی جلتی ہے اور فلم کے سپر ہٹ ہونے کے بعد گیتا کا معاملہ ایک بار پھر زیرِ بحث آیا ہے۔

کچھ برس قبل بھی گیتا کی کہانی پاکستانی میڈیا میں آئی تھی لیکن کسی نے اس پر توجہ نہیں دی تھی۔

گیتا اس بھارتی لڑکی کا اصلی نام نہیں ہے بلکہ یہ نام سے ايدھي فاؤنڈیشن کے بانی عبدالستار ايدھي کی اہلیہ بلقیس ايدھي نے دیا تھا۔

گیتا 2003 میں بھارت سے ایک ٹرین کے ذریعہ لاہور پہنچي تھیں اور مقامی پولیس نے انھیں ایدھي فاؤنڈیشن کے حوالے کر دیا تھا۔

اسی بارے میں