کراچی پولیس ایک بار پھر نشانے پر، چار اہلکار ہلاک

Image caption کراچی میں رواں برس 50 سے زیادہ پولیس افسران اور اہلکاروں کو نشانہ بنا کر ہلاک کیا جا چکا ہے

پاکستان کے شہر کراچی میں پولیس کے مطابق نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کر کے چار پولیس اہلکاروں کو ہلاک کر دیا ہے۔

کراچی ضلع شرقی کے ڈی آئی جی پولیس منیر شیخ نے بی بی سی اردو کو بتایا کہ واقعہ بدھ کو کورنگی کے علاقے زمان ٹاؤن میں پیش آیا۔

ان کے مطابق حملہ آوروں نے پولیس کی ایک موبائل پر فائرنگ کی اور ہوٹل پر بیٹھے ہوئے پولیس اہلکاروں کو بھی نشانہ بنایا۔

منیر شیخ کے مطابق اس حملے میں چار اہلکار ہلاک اور چار زخمی ہوگئے جن میں ایک اسسٹنٹ سب انسپکٹر بھی شامل ہے۔

تاحال کسی تنظیم کی جانب سے اس کارروائی کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی ہے۔

شہر میں رواں برس 50 سے زیادہ پولیس افسران اور اہلکاروں کو نشانہ بنا کر ہلاک کیا جا چکا ہے۔

ہلاک ہونے والے پولیس اہلکاروں میں ایک سابق جیل سپرنٹنڈنٹ اور متعدد ڈی ایس پیز اور ایس ایچ او بھی شامل ہیں۔

کراچی میں شدت پسندوں اور جرائم پیشہ عناصر کے خلاف آپریشن کے آغاز کے بعد سے سکیورٹی اہلکاروں پر حملوں میں اضافہ ہوا ہے اور ان میں سے کئی حملوں کی ذمہ داری شدت پسند کالعدم تنظیم تحریکِ طالبان نے قبول کی تھی۔

رینجرز اور پولیس اہلکار کراچی کے مختلف علاقوں اور مضافات میں خفیہ اطلاعات کی بنیاد پر شدت پسندوں اور کالعدم تنظیموں کے ارکان کے خلاف کارروائیاں کرتے رہے ہیں۔

رینجرز نے پچھلے ماہ ایک رپورٹ میں کہا تھا کہ آپریشن کے دوران دہشتگردی اور دیگر جرائم کے دس ہزار سے زیادہ ملزمان گرفتار ہوئے جبکہ مقابلوں میں 364 مشتبہ جرائم پیشہ افراد مارے گئے۔

اسی بارے میں