ایل او سی پر بھارتی فوج کی فائرنگ سے ایک خاتون ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان کا دعویٰ ہے کہ ڈیڑھ ماہ میں بھارت نے 60 سے زائد بار لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باؤنڈری پر فائربندی کی خلاف ورزی کی ہے

پاکستانی حکام کے مطابق بھارت کی سرحدی فوج کی جانب سے لائن آف کنٹرول پر فائرنگ اور گولہ باری کے نتیجے میں ایک خاتون ہلاک اور ان کےشوہر اور دو بیٹیوں سمیت تین افراد زخمی ہو گئے ہیں۔

پاکستان کا بھارت سے احتجاج

سرکاری ٹی وی نے عسکری ذرائع کے حوالے سے خبر دی ہے کہ جمعے کو بھارتی فوج کی جانب سے نیزہ پیر سیکٹر کے موہری نامی گاؤں کو نشانہ بنایا گیا جس کے بعد پاکستانی افواج نے بھارتی فائرنگ کا موثر جواب دیا۔

خیال رہے کہ پاکستان کے دفترِ خارجہ نے 11 اگست کو بھارتی نائب ہائی کمشنر کو دفترِ خارجہ طلب کر کے ان سے احتجاج کیا تھا اور بتایا تھا کہ ’صرف ڈیڑھ ماہ کے دوران بھارت کی جانب سے لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باؤنڈری پر فائربندی کی 60 سے زیادہ مرتبہ خلاف ورزی کی گئی ہے۔‘

گذشتہ ماہ ہی پاکستانی فوج نے پاکستان کے زیرانتظام کشمیر میں ایل او سی کے قریب بھمبھر کے مقام پر مبینہ طور پر جاسوسی کرنے والا بھارتی ڈورن مار گرانے کا دعویٰ کیا تھا۔

ادھر جمعے ہی کو بھارت کے ڈپٹی ہائی کمشنر کو دفترخارجہ طلب کر کے سمجھوتہ ایکسپریس حملے کے مرکزی ملزم کی ضمانت منسوخ نہ ہونے پر شدید احتجاج کیاگیا۔

یاد رہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان چلنے والی ٹرین سمجھوتہ ایکپریس میں نو برس قبل ہونے والے بم دھماکے کے مقدمے کے اصل ملزم سوامی اسیم آنند ضمانت پر رہا ہو چکے ہیں۔ اس واقعے کے 11 اہم ‎سرکاری گواہ گذشتہ چند ہفتوں میں منحرف ہو چکے ہیں۔

ادھر پاکستان اور بھارت کے قومی سلامتی کے مشیروں کے درمیان 23 اگست کو دہلی میں مذاکرات ہوں گے۔

اسی بارے میں