بنوں سے دو نوجوانوں کی لاشیں برآمد

Image caption پولیس نے لاشیں سول ہسپتال پہنچا دی ہیں جہاں ان کا پوسٹ مارٹم کیا جا رہا ہے

خیبر پختونخوا کے ضلع بنوں سے دو نوجوانوں کی لاشیں ملی ہیں جنھیں فائرنگ کر کے قتل کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ موقعے سے بڑی تعداد میں گولیوں کے خول بھی ملے ہیں۔

پولیس اہلکاروں نے بتایا کہ یہ واقعہ بنوں کے مضافات میں شیخان کے علاقے میں پیش آیا، لیکن اب تک ان کے قتل کی وجہ معلوم نہیں ہو سکی۔ ایسی اطلاعات ہیں کہ یہ واقعہ آدھی رات کے وقت پیش آیا۔

پولیس کے مطابق انھیں صبح کے وقت اطلاعات ملیں کہ علاقہ شیخان میں دو افراد کی لاشیں خون میں لت پت پڑی ہیں۔ پولیس نے لاشیں سول ہسپتال پہنچا دی ہیں جہاں ان کا پوسٹ مارٹم کیا جا رہا ہے۔

بنوں کے تھانہ صدر کے پولیس اہلکار نے بتایا کہ قتل کیے جانے والے نوجوانوں کے نام اعزاز اور فہد ہیں اور ان دونوں کی عمریں 22 سے 25 سال کے درمیان ہیں۔

بنوں شہر میں دو ہفتے پہلے ایک پولیس اہلکار کو تیل منڈی میں اس وقت فائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا تھا جب وہ ڈیوٹی سر انجام دینے کے بعد ہوٹل پر بیٹھ کر ناشتہ کر رہے تھے۔

جنوبی ضلع بنوں شمالی وزیرستان کی سرحد کے قریب واقع ہے اور گذشتہ سال جون میں شروع کیے گئے فوجی آپریشن ضرب عضب کے نتیجے میں نقل مکانی کرنے والے بیشتر متاثرین ان دنوں ضلع بنوں میں مقیم ہیں۔

ان متاثرین کے واپسی کا سلسلہ جاری ہے لیکن شمالی وزیرستان کے قبائلی رہنماؤں کا کہنا ہے کہ متاثرین کی واپسی انتہائی سست روی سے جاری ہے۔

اسی بارے میں