کوئٹہ میں مسلح افراد کی فائرنگ سے ریٹائرڈ ڈی آئی جی ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سنہ 2000 میں کوئٹہ شہر میں حالات کی خرابی کے بعد وہ کوئٹہ پولیس کے اہم عہدوں پر فائز رہے تھے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں فائرنگ کے ایک واقعہ میں پولیس کا ایک ریٹائرڈ ڈی آئی جی ہلاک ہوگیا۔

سابق ڈی آئی جی قاضی واحد کو نامعلوم حملہ آوروں نے بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب سریاب کے علاقے میں نشانہ بنایا۔

کوئٹہ پولیس کے ایک اہلکار نے بتایا کہ قاضی واحد رات ساڑھے آٹھ بجے کے قریب شہر سے اپنی گاڑی میں گھر کی جانب جارہے تھے جب ان کی گاڑی عارف گلی کی جانب مڑی تو وہاں پہلے سے موجود نامعلوم مسلح افراد نے ان پر فائرنگ کر دی۔

فائرنگ کے نتیجے میں ریٹائرڈ ڈی آئی جی شدید زخمی ہوگئے۔

ان کو ابتدائی طبی امداد کے لیے سول ہسپتال منتقل کیا جارہا تھا کہ راستے میں زخموں کی تاب نہ لاکر چل بسے۔

پولیس اہلکار کے مطابق حملہ آور موٹر سائیکل پر تھے جو حملے کے بعد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ پولیس اہلکار نے بتایا کہ قتل کے واقعے کے بارے میں تفتیش کا آغاز کردیا گیا ہے ۔

قاضی واحد پولیس میں ملازمت کے دوران زیادہ تر کوئٹہ میں تعینات رہے۔ سنہ 2000 میں کوئٹہ شہر میں حالات کی خرابی کے بعد وہ کوئٹہ پولیس کے اہم عہدوں پر فائز رہے۔

خیال رہے کہ سریاب کا شمار کوئٹہ کے ان علاقوں میں ہوتا ہے جہاں شہر کے دوسرے علاقوں کے مقابلے میں امن و امان کی صورتحال زیادہ خراب ہے۔ بلوچستان میں حالات کی خرابی بعد سریاب کے علاقے میں ٹارگٹ کلنگ اور بدامنی کے واقعات کمی بیشی کے ساتھ جاری ہیں۔ تاہم بلوچستان کی موجودہ حکومت کا یہ دعویٰ ہے کہ پہلے کے مقابلے میں سریاب اور دیگر علاقوں میں حالات میں بہتری آئی ہے۔

اسی بارے میں