قبائلی علاقوں میں امن لشکر کے رضاکار پھر نشانے پر

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مہمند ایجنسی میں پولیٹکل انتظامیہ نے امن کمیٹیاں یہ کہہ کر ختم کرنے کا اعلان کیا تھا کہ اب علاقے میں امن قائم ہو چکا ہے

پاکستان میں وفاق کے زیرانتظام قبائلی علاقے مہمند ایجنسی میں دو روز میں امن لشکر کے دو سابقہ رضاکاروں سمیت تین افراد ہلاک اور ایک بچے سمیت دو افراد زخمی ہوئے ہیں جبکہ پشاور میں پولیس پر حملے میں ایک اہلکار سمیت دو حملہ آور ہلاک اور تین اہلکار زخمی ہوگئے ہیں۔

مہمند ایجنسی کی تحصیل پنڈیالی میں داویزئی کے مقام پر سڑک کنارے نصب دیسی ساختہ بم کا دھماکہ ہوا ۔ پولیٹکل انتظامیہ کے مطابق یہ دھماکہ اس وقت ہوا جب امن کمیٹی کے سابق دو رضا کار وہاں سے موٹر سائیکل پر گزر رہے تھے۔اس دھماکے میں دونوں رضاکار ہلاک ہوگئے ہیں۔

مہمند ایجنسی میں پولیٹکل انتظامیہ نے امن کمیٹیاں یہ کہہ کر ختم کرنے کا اعلان کیا تھا کہ اب علاقے میں امن قائم ہو چکا ہے ۔

تحصیل پنڈیالی باجوڑ ایجنسی کے قریب واقع ہے ۔

اسی طرح رات گئے پنڈیالی تحصیل کے اسی علاقے داویزئی میں نامعلوم افراد نے زرغون شاہ نامی شخص کے مکان پر دستی بم سے حملہ کیا ہے ۔ اس حملے میں زرغون شاہ کی اہلیہ ہلاک ہو گئی ہیں جبکہ زرغون شاہ اور ان کا بیٹا اس حملے میں زخمی ہوئے ہیں۔

اس حملے کی وجوہات اب تک معلوم نہیں ہو سکیں اور نہ ہی کسی نے ان حملوں کی ذمہ داری تک قبول کی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption پشتخرہ کے علاقے میں نامعلوم افراد نے پولیس کی ایک موبائل گاڑی پر فائرنگ کی تھی جس میں ایک تھانیدار سمیت چار اہلکار زخمی ہوگئے

دوسری جانب جمعے کی شب پشاور کے پشتخرہ کے علاقے میں نامعلوم افراد نے پولیس کی ایک موبائل گاڑی پر فائرنگ کی تھی جس میں ایک تھانیدار سمیت چار اہلکار زخمی ہوگئے تھے جس پر پولیس نے جوابی کارروائی کی تھی اور دو حملہ آوروں کو ہلاک کر دیا تھا۔

سنیچر کی صبح ایک زخمی پولیس اہلکار اجمل زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا ہے۔

پشتخرہ تھانے کے پولیس اہلکار نے بتایا کہ ایک حملہ آور کی شناخت سیف اللہ کے نام سے ہوئی ہے اور وہ یہاں پشاور کے مضافاتی علاقے پاوکہ کا رہائشی تھا۔

صرف یہی نہیں کل رات پشاور کے ادرون شہر رشید گڑھی سے ایک شخص کا پھندا لگی ہوئی لاش ملی ہے ۔ پولیس کے مطابق رحمان گل نامی شخص کو پھندا لگا کر لاش رشید گڑھی چوک میں پھینک دی گئی تھی۔

رحمان گل کا تعلق مہمند ایجنسی سے بتایا گیا ہے اور ان کے ورثا کا کہنا ہے کہ ان کی کسی سے کوئی دشمنی نہیں ہے ۔

اس کے علاوہ کل پشاور کے گنجان آباد علاقے جھنگی محلے میں نامعلوم افراد نے ایک شخص قیصر رضا کو فائرنگ کرکے ہلاک کر دیا تھا۔ مقتول کا تعلق اہل تشیع سے بتایا گیا ہے۔

اسی بارے میں