’ترقی کی کنجی خواتین کو بااختیار بنانے سے وابستہ ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption وزیراعظم نےصنفی مساوات اور خواتین کو با اختیار بنانے کے موضوع پر اجلاس بلانے پر صدر شی جن پنگ اور اقوامِ متحدہ کے خواتین کے ادارے کا شکریہ بھی ادا کیا

پاکستان کے وزیرِاعظم میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ خواتین کو بااختیار بنانا پاکستان کے آئین کا حصہ ہے اور حکومت زندگی کے تمام شعبوں میں خواتین کے مرکزی کردار کو یقینی بنانے کے لیے پرعزم ہے۔

نیویارک میں خواتین کے حقوق سے متعلق اقوامِ متحدہ کے خصوصی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیرِ اعظم نے کہا کہ پاکستان اس حقیقت سے بخوبی واقف ہے کہ دنیا کی ترقی کے لیے عورتوں کو ان کے حقوق دینا لازمی ہے۔

انن کا کہنا تھا کہ اسی لیے پاکستان میں خواتین کی حوصلہ افزائی کی جارہی ہے کہ وہ قومی زندگی کے ہر شعبے ، بشمول سیاست میں کلیدی کردار ادا کریں۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوے میاں محمد نواز شریف کا کہنا تھا کہ ’ آج کے پاکستان میں ماضی کی نسبت ایک بڑی تعداد میں لڑکیاں اعلیٰ تعلیم حاصل کر رہی ہیں اور پیشہ ورانہ شعبوں سے منسلک ہیں۔‘

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیرِاعظم پاکستان کا کہنا تھا کہ عورتوں کو ان کے حقوق دینا ہمارے ایمان اور آئین کا حصہ ہے۔

اس موقعے پر پاکستان کے وزیراعظم نےصنفی مساوات اور خواتین کو با اختیار بنانے کے موضوع پر اجلاس بلانے پر صدر شی جن پنگ اور اقوامِ متحدہ کے خواتین کے ادارے کا شکریہ بھی ادا کیا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہم سنہ 2015 کے بعد کے ترقیاتی ایجنڈے میں صنفی مساوات اور خواتین کو بااختیار بنانے کی شق کی شمولیت کا خیر مقدم کرتے ہیں۔

پاکستان میں خواتین کو بااختیار بنانے کے حوالے سے اپنی حکومت کے اقدامات گنواتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اس بات کو تسلیم کرتے ہوئے کہ ملک کی ترقی کی کنجی خواتین کو بااختیار بنانے سے وابستہ ہے ہم نے کئی اقدامات اٹھائے ہیں۔

وزیرِ اعظم کی جانب سے بتائے جانے والے اقدامات میں خواتین کی حفاظت کے لیے قانون سازی، عورتوں کے حالات کا جائزہ لینے کے لیے قومی اور صوبائی کمیشنز کا قیام، نوجوانوں کے لیے قرضہ سکیم اور دس سالہ ترقیاتی منصوبے ’وژن 2025‘ میں عوامی سطح پر خواتین قیادت کو سامنے لانا شامل تھے۔

اسی بارے میں