’شیر آ نہیں رہا، شیر آ گیا ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption سارا دن مختلف ٹرینڈز ابھرتے رہے جبکہ اس وقت پی ٹی آئی بمقابلہ مسلم لیگ ن صفِ اول کا ٹرینڈ ہے

لاہور میں این اے 122 کے اضمنی انتخاب کے حوالے سے سوشل میڈیا پر کم و بیش اتنی ہی گہما گہمی ہے جتنی عام انتخابات کے دنوں میں تھی۔

قومی اسمبلی کے سابق سپیکر اور عمران خان کے ایک زمانے میں رفیق اور ساتھی سردار ایاز صادق مسلم لیگ ن کی جانب سے اس حلقے کے امیدوار تھے جبکہ پی ٹی آئی نے ان کے مقابلے میں علیم خان کو اپنا امیدوار کھڑا کیا۔

اس حلقے کے غیر سرکاری اور غیر حتمی نتائج کے اعلان کے بہت پہلے سے ہی ٹوئٹر پر خصوصاً اور فیس بُک پر پی ٹی آئی کے حامیوں کے درمیان گھمسان کی جنگ جاری تھی۔

سارا دن مختلف ٹرینڈز ابھرتے رہے جبکہ اس وقت پی ٹی آئی بمقابلہ مسلم لیگ ن صفِ اول کا ٹرینڈ ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

مریم نواز کی جانب سے رات کے ساڑھے گیارہ بجے کے لگ بھگ ٹویٹ کی گئی کہ ’شیر آ نہیں رہا شیر آ گیاہے۔‘

جس کے بعد انھوں نے لکھا ’لاہور کے شیرو! آپ نے تباہی کی، گلم گلوچ اور الزامات کی سیاست کو ختم کر دیا ہے۔‘

پی ٹی آئی کے لاہور سے ایم این اے شفقت محمود نے لکھا کہ ’ایک قومی اسمبلی کی نشست کو تھوڑے فرق سے ہارنا، اور ایک صوبائی اسمبلی کی نشست کو جیتنا جہاں حکومت تمام وسائل جن میں پولیس شامل ہے استعمال کر رہی ہو پی ٹی آئی کی فتح ہے۔‘

شفقت محمود کا اشارہ پنجاب کی صوبائی اسمبلی کی نشست پی پی 147 کی جانب تھا جہاں پی ٹی آئی کے امیدوار اُن کے بقول کامیاب ہوئے ہیں چونکہ ابھی تک سرکاری نتائج کا اعلان نہیں ہوا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

شفقت محمود کی طرح پی ٹی آئی کے بہت سے کارکنوں نے ایک جانب بعض ٹی وی چینلز کی جانب سے اس بات کے تاثر پر شکوہ کیا جو اُن کے بقول مسلم لیگ نواز کی این اے 122 میں فتح کا تاثر دے رہے تھے تو دوسری جانب خود صوبائی اسمبلی کے حلقے کے نتائج کو بعض ٹی وی چینلز کی جانب کے اعلان کردہ نتائج پر فتح قرار دیا۔

صحافی اور تجزیہ کار طلعت حسین نے ٹویٹ کی کہ ’این اے 122 نے 2015 میں بھی تقریباً اسی طرح ووٹ دیا ہے جس طرح 2013 میں دیا تھا۔‘

جہاں ایک جانب پی ٹی آئی کےحامی قومی اسمبلی کی نشست کے حوالے سے مختلف قسم کے دعوے اور تبصرے کر رہے تھے وہیں اسی حلقے کی صوبائی اسمبلی کی نشست پر کامیابی پر وہ جشن مناتے رہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

پی ٹی آئی کے امیدوار علیم خان نے اپنی ٹویٹ میں لکھا ’میں ان تمام ووٹروں کا جو میرے لیے باہر نکلے اور مجھے ووٹ دیا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں۔ آپ نے سچائی، انصاف اور بہتر پاکستان کے لیے ووٹ دیا۔‘

دوسری جانب سردار ایاز صادق نے بھی ووٹروں کا شکریہ ادا کیا اور لکھا کہ ’لاہور نے کہا ہے کہ کوئی اور نہیں بس شیر۔‘

اسی بارے میں