سمجھوتہ ایکسپریس کی معطلی سے متاثر مسافر پاکستان روانہ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption پاکستان اور بھارت کے درمیان سمجھوتہ ٹرین کی سروس سنیچر کے روز معطل کی گئی تھی

پاکستان کے دفترِ خارجہ نے تصدیق کی ہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان چلنے والی ریل گاڑی سمجھوتہ ایکسپریس کی معطلی کے باعث بھارت میں پھنس جانے والے پاکستانی مسافروں کو بس کے ذریعے پاکستان روانہ کر دیا گیا ہے۔

دفتر خارجہ کے ترجمان قاضی خلیل اللہ کے مطابق ٹرین سروس کی معطلی کی وجہ سے 33 پاکستانی شہری چار روز سے دہلی کے ریلوے سٹیشن پر محصور تھے جنھیں بدھ کی دوپہر بس کے ذریعے پاکستان روانہ کیا گیا ہے۔

ادھر پاکستانی ریلوے کے حکام کا کہنا ہے کہ وہ لاہور کے ریلوے سٹیشن پر پھنسے ہوئے 40 مسافروں کو بھارت بھجوانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ان مسافروں میں سے 20 کا تعلق بھارت سے ہے۔

خیال رہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان سمجھوتہ ایکسپریس کی سروس سنیچر کو معطل کی گئی تھی۔

معطلی کی وجہ بھارتی پنجاب میں کسانوں کے احتجاجی مظاہروں کو قرار دیا گیا تھا۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان چلنے والی اس واحد ریل سروس کی معطلی کی وجہ سے بھارتی اور پاکستانی شہری ایک دوسرے کے ملک میں پھنس کر رہ گئے تھے۔

پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان کے مطابق بھارتی حکام نے پاکستان کو بتایا ہے کہ سمجھوتہ ایکسپریں کی آمدورفت کا سلسلہ بدھ کی شب سے بحال کر دیا جائے گا۔

اسی بارے میں