پاکستان میں زلزلے سے 25 ہزار سے زائد مکانات تباہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption این ڈی ایم اے کے مطابق خیبر پختونخوا میں سے سے زیادہ مکانات سوات میں تباہ ہوئے ہیں

پاکستان کے قدرتی آفات سے نمٹنے کے ادارے این ڈی ایم اے کے مطابق گذشتہ پیر کو آنے والے شدید زلزلے کے نتیجے میں ملک بھر میں 25 ہزار سے زائد مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔

این ڈی ایم اے کے تازہ اعداد وشمار کے مطابق کل 25367 مکانات مکمل یا جزوی طور پر تباہ ہوئے ہیں۔

متاثرین اب بھی امداد کے منتظر

کب کیا ہوا

حالیہ زلزلہ اور 2005 کا زلزلہ

پیر کو آنے والے7.5 شدت کے اس زلزلے میں ہونے والی ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 272 ہے جبکہ 2152 افراد زخمی ہوئے ہیں۔

زلزلے سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے صوبے خیبر پختونخوا میں 15692 مکانات اور 155 سکولوں کو نقصان پہنچا ہے جبکہ صوبے میں ہلاکتوں کی کل تعداد 255 ہے۔ صوبہ خیبر پختونخوا میں 1802 افراد زخمی ہوئے ہیں۔

این ڈی ایم اے کے مطابق خیبر پختونخوا میں سے سے زیادہ مکانات سوات میں تباہ ہوئے ہیں جن کی تعداد 3681 ہے۔سب سے زیادہ ہلاکتیں ضلع شانگلہ میں ہوئیں جہاں 50 افراد ہلاک ہوئے۔

چترال سے 32 ہلاکتوں کی تصدیق ہوئی ہے تاہم وہاں کی مقامی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والوں کی تعداد 37 ہے اور متعدد کچی بستیاں مکمل طور پر منہدم ہو چکی ہیں۔

قبائلی علاقے فاٹا میں بھی تباہی ہوئی ہے جہاں ہلاکتوں کی تعداد 30 ہوگئی ہے۔ سب سے زیادہ باجوڑ ایجنسی متاثر ہوئی جہاں 23 ہلاکتیں ہوئیں اور 8120 مکانات تباہ ہوئے۔

پی ڈی ایم اے کے مطابق کل 155 تعلیمی اداروں کی تباہی کیاطلاعات ہیں۔

گلگت بلتستان میں تباہ ہونے والے مکانات کی کل تعداد 413 ہے۔ سب سے زیادہ مکانات غضر میں تباہ ہوئے ہیں جن کی تعداد 250 ہے۔

دوسری جانب پنجاب میں بھی زلزلے سے مکانات کو نقصان پہنچا ہے جہاں تباہ ہونے والے مکانات کی کل تعداد 61 ہے جبکہ پانچ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ راولپنڈی میں سب سے زیادہ مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔

اسی بارے میں