جنرل راحیل شریف دو روزہ دورے پر سعودی عرب میں

تصویر کے کاپی رائٹ ispr
Image caption سعودی عرب کی علاقائی سالمیت اور استحکام کوکسی بھی خطرے کی صورت میں پاکستان کا سخت ردعمل ہوگا

پاکستان کے آرمی چیف جنرل راحیل شریف دو روزہ سرکاری دورے پر سعودی عرب میں موجود ہیں جہاں وہ اعلیٰ حکام سے ملاقاتیں کر رہے ہیں۔

پاکستانی فوجی مشقوں میں شریک ہیں جنگ میں نہیں

فوج کے شعبہ تعلقاتِ عامہ کے مطابق سعودی عرب پہنچنے پر آرمی چیف کا پرجوش اسقبال وہاں کی بری فوج کے سربراہ اور نائب وزیرِ دفاع نے کیا۔

حکام کا کہنا ہے کہ جنرل راحیل شریف نے سعودی فورسز کے چیف آف جنرل سٹاف عبدالرحمٰن بن صالح سے ملاقات کی۔ ملاقات میں دفاعی تعاون، سکیورٹی و خطے کی صورتحال پر بات چیت کی گئی۔

آئی ایس پی آر کے ترجمان کا کہنا ہے کہ آرمی چیف سعودی عرب کے اعلیٰ سیاسی اور فوجی حکام سے ملاقاتیں بھی کریں گے۔

خیال رہے کہ پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان حال ہی میں صوبہ پنجاب میں جہلم کے قریب ہونے والی جنگی مشقوں ’اشہاب‘ کے اختتام پر جنرل راحیل شریف نے اپنے خطاب میں کہا تھا کہ سعودی عرب کی علاقائی سالمیت اور استحکام کوکسی بھی خطرے کی صورت میں پاکستان کا سخت ردعمل ہوگا۔

سعودی عرب کی جانب سے یمن میں کئی ماہ سے جنگ جاری ہے تاہم پاکستان کی پارلیمان نے حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔ اور کہا تھا کہ وہ سعودی جنگ میں اتحادی بننے کے بجائے غیر جانبدارانہ کردار ادا کرے۔

اسی بارے میں