چارسدہ میں غیرت کے نام پر دو لوگ قتل

Image caption پاکستان میں سرکاری اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ دو برسوں میں غیر کے نام پر 930 افراد کو قتل کیا گیا تھا

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع چارسدہ میں غیرت کے نام پر ایک خاتون اور ایک مرد کو فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا گیا ہے۔

پاکستان میں گذشتہ دو برسوں میں نو سو افراد کو غیرت کے نام پر قتل کیا گیا ہے۔

پاکستان: غیرت کے نام پر قتل کے ہولناک واقعات

خیبر پختونخوا میں صوبہ سندھ اور پنجاب کی نسبت غیرت کے نام پر قتل کے واقعات کم پیش آتے ہیں لیکن گذشتہ دو برسوں میں ان واقعات میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔

چارسدہ پولیس کے اہلکار عطاالرحمان نے بی بی سی کو بتایا کہ یہ واقعہ رات کے وقت پیش آیا۔ پولیس کے مطابق امباڈھیر کے علاقے میں بھائی نے مبینہ ناجائز تعلقات رکھنے پر اپنی بہن اور ایک نوجوان کو فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا۔

پولیس نے بتایا کہ ملزم رات کو جب اپنے گھر داخل ہوا تو ایک غیر مرد کو گھر میں دیکھا جس پر ملزم نے فائرنگ کی اور واقعے کے بعد فرار ہوگیا ہے۔

دو ماہ پہلے چارسدہ میں غیرت کے نام پر دیور نے بھابھی اور ایک شخص کو ہلاک کر دیا تھا۔ یہ واقعہ اس سال ستمبر میں چارسدہ کے علاقے گل آباد میں پیش آیا تھا۔

پاکستان میں سرکاری اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ دو برسوں میں غیرت کے نام پر 930 افراد کو قتل کیا گیا تھا۔ یہ اعداد و شمار 2013 اور 2014 کے بتائے گئے ہیں۔ ان اعداد و شمار کے مطابق سب سے زیادہ واقعات صوبہ سندھ اور صوبہ پنجاب میں پیش آئے ہیں جبکہ تیسرے نمبر پر خیبر پختونخوا اور چوتھے نمبر پر بلوچستان ہے۔

خیبر پختونحوا میں غیرت کے نام پر قتل کے واقعات میں سال 2013 کی نسبت سال 2014 میں اضافہ دیکھا گیا تھا۔ سال 2013 میں صوبہ بھر میں غیرت کے نام پر قتل کے میں 47 واقعات رپورٹ ہوئے تھے جبکہ سال 2014 میں یہ تعداد 78 بتائی گئی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption اعداد و شمار کے مطابق سب سے زیادہ واقعات صوبہ سندھ اور صوبہ پنجاب میں پیش آئے ہیں جس پر احتجاج بھی کیا جاتا رہا ہے

اسی بارے میں