پیپلز پارٹی کے سینیئر رہنما مخدوم امین فہیم انتقال کر گئے

تصویر کے کاپی رائٹ NATIONAL ASSEMBLY OF PAKISAN
Image caption چار اگست سنہ 1939 کو مٹیاری کے علاقے ہالا میں پیدا ہونے والے مخدوم امین فہیم سندھ کے بااثر جاگیردار گھرانے سے تعلق رکھتے تھے

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینیئر رہنما مخدوم امین فہیم 76 برس کی عمر میں طویل علالت کے بعد سنیچر کو کراچی کے مقامی ہسپتال میں انتقال کر گئے۔

سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق وہ خون کے سرطان میں مبتلا تھے۔ ان کی نمازِ جنازہ ان کے آبائی علاقے ہالہ میں ادا کر دی گئی ہیں۔

’سیاست کریں لیکن جنازے نہ اٹھائیں‘

مخدوم امین فہیم حال ہی میں لندن سے کراچی منتقل ہوئے تھے جہاں وہ ایک ہسپتال میں زیر علاج تھے۔

امین فہیم نے سنہ 1958 میں سندھ یونیورسٹی سے پولیٹیکل سائنس میں بیچلر کی ڈگری حاصل کی اور سنہ 1970 سے عملی سیاست میں قدم رکھا۔ وہ پاکستان پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پر پہلی بار ٹھٹہ کے حلقے سے رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے اس کے بعد وہ مسلسل کے عام انتخابات تک کامیابی حاصل کرتے رہے۔

جنرل (ریٹائرڈ) ضیاالحق کے دور حکومت میں جب خود پیپلز پارٹی کے لوگ غیر جماعتی بنیادوں پر انتخابات میں شریک ہوئے مخدوم امین فہیم نے پارٹی قیادت کا ساتھ دیا اور انتحابات کا بائیکاٹ کیا۔

چار اگست سنہ 1939 کو ہالا میں پیدا ہونے والے مخدوم امین فہیم سندھ کے بااثر جاگیردار گھرانے سے تعلق رکھتے تھے۔

ان کے والد مخدوم طالب مولیٰ کا شمار پاکستان پیپلز پارٹی کے بانیوں میں ہوتا ہے، پارٹی کا پہلا کنوینشن بھی ہالا میں منعقد کیا گیا تھا۔

مخدوم امین فہیم پاکستان پیپلز پارٹی کے سینیئر نائب چیئرمین کے علاوہ پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر بھی تھے۔

وہ تین مرتبہ وزراتِ عظمیٰ کی کرسی کے قریب پہنچے لیکن کبھی سیاسی وفاداری تو کبھی پارٹی قیادت کی وجہ سے وہ اس پر برا جماں نہ ہوسکے۔ جنرل (ریٹائرڈ) ضیاالحق کے دور میں انھیں یہ پیشکش ہوئی، اس کے بعد جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف نے بھی یہ آفر کی لیکن مخدوم خاندان نے دونوں بار اس کو مسترد کیا۔

انھوں نے پیپلز پارٹی کے دورِ حکومت میں مختلف قلمدانوں کے لیے بطور وفاقی وزیر خدمات سرانجام دیں۔

وہ بینظیر بھٹو کے سنہ 1988 سے 1990 تک پہلے دورِ حکومت میں مواصلات اور سنہ 1994 سے 1996 تک دوسرے دورِ حکومت میں ہاؤسنگ اینڈ پبلک ورکس کے وفاقی وزیر رہے۔

ادھر وزیرِ اعظم نواز شریف نے پیپلز پارٹی کے رہنما مخدوم امین فہیم کے انتقال پر دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے سوگوار خاندان کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔

اسی بارے میں