رینجرز کے اختیارات میں توسیع کی جائے

تصویر کے کاپی رائٹ bbc

کراچی میں پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فیصل واوڈا نے رینجرز کے اختیارات کی مدت میں توسیع کے معاملے میں تاخیر پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ رینجرز کو شرمندہ کرنے کے مترادف ہے۔

ٹیلی فون پر بی بی سی اردو سروس سے بات کرتے ہوئے فیصل واوڈا نے کہا کہ کراچی میں امن و اماں برقرار رکھنے کے لیے رینجرز کے اختیارات میں بلا تاخیر توسیع کی جانی چاہیے۔

کراچی میں گذشتہ دنوں وزیر اعظم کی زیر صدارت ہونے والے ایک اجلاس میں اس عزم کا اعادہ کیا گیا تھا کہ کراچی میں آپریشن جاری رہے گا۔ لیکن اس اجلاس کے بعد بھی جس میں پاکستان فوج کے سربراہ راحیل شریف بھی شریک ہوئے تھے کراچی میں تعینات اور آپریشن کرنے والے ادارے رینجرز کو حاصل خصوصی اختیارات میں توسیع کا کوئی فیصلہ سامنے نہیں آیا۔

فیصل واوڈا نے کہا کہ رینجرز نے کراچی میں بڑی حد تک امن تو بحال کر دیا ہے لیکن یہ عارضی ہے کیونکہ پراسیکیوشن ان کے ساتھ نہیں ہے۔ انھوں نے الزام عائد کیا کہ پراسیکیوشن یا تو ثبوت فراہم ہی نہیں کرتے یا مٹا دیتے ہیں جس سے ملزماں عدالتوں سے بری ہو جاتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ رینجرز ’کرپشن اور کرمنل‘ کےخلاف کارروائیاں کرتے ہیں جس میں سیاسی شخصیات اور سیاسی پارٹیاں ملوث ہوتی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ سیاسی جماعتیں گٹھ جوڑ کر کے رینجر کے افسروں اور جوانوں کے حوصلہ پست کر رہے ہیں اور ان کو شرمندہ بھی کر رہے ہیں۔

رینجرز کو کرپشن کے خلاف کارروائی کرنے کے مینڈیٹ کے بارے میں ایک سوال پر انھوں نے کہا کہ جب کرپشن کا پیسہ شدت پسندی کے خلاف استعمال ہونے لگے تو رینجرز کو کارروائی کا اختیار حاصل ہے۔ فیصل واوڈا نے کہا کہ نوے فیصد شدت پسندی یا دہشت گردی میں کرپشن کے پیسے سے ہو رہی ہے۔

انھوں نے کہا کہ بھتہ خوری، ٹارگٹ کلنگ اور دوسرے جرائم کرپشن کے پیسے سے ہو رہی ہے اور اس میں سب ہی سیاسی جماعتیں کسی نہ کسی طرح ملوث ہیں۔ حالیہ انتخابات میں تحریک انصاف کی غیر تسلی بخش کارکردگی پر فیصل واوڈا کا کہنا تھا کہ ان کی جماعت مقبولیت کے لحاظ سے تو بہت آگے ہے لیکن تنظیمی لحاظ سے ابھی اتنی موثر نہیں ہے۔

انھوں نے کہا کہ کراچی میں حالیہ بلدیاتی انتخابات میں ووٹ ڈالنے کا تناسب بہت کم رہا جو بھی ان کی جماعت کی غیر تسلی بخش کارکردگی کا ایک بڑا سبب ہے۔ فیصل واوڈا نے بلدیاتی انتخابات میں انتخابی انتظامات پر بھی عدم اطمینان کا اظہار کیا۔

اسی بارے میں