راحیل شریف اتوار کو کابل جائیں گے

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

پاکستان کی فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف افغان حکومت اور طالبان کے درمیان تعطل کا شکار مذاکرات کو بحال کرنے کے لیے کی جانے والی کوششوں کے سلسلے میں اتوار کو افغانستان کے دارالحکومت کابل جائیں گے۔

فوج کے شعبے تعلقات عامہ کی طرف سے جاری ہونے والے ایک پریس ریلیز میں کہا گیا کہ جنرل راحیل شریف ایک روزہ دورے کے دوران کابل میں افغانستان کی سیاست اور فوجی قیادت سے ملاقات کریں گے۔

امریکی خبررساں ادارے ایسو سی ایٹڈ پریس کے مطابق جنرل راحیل شریف کو اس ماہ کے شروع میں اسلام آباد میں افغانستان کے بارے میں ہونے والی بین الاقوامی کانفرس کے انعقاد سے قبل نو دسمبر کو کابل جانا تھا لیکن دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کی پیچیدگی کے باعث یہ دورہ ملتوی کر دیا گیا تھا۔

افغان حکومت اور طالبان کے درمیان براہ راست مذاکرات پہلی مرتبہ اس سال جولائی میں پاکستان کی میزبانی میں اسلام آباد کے قریب سیاحتی مرکز مری میں منعقد ہوئے تھے۔

لیکن مذاکرات کا یہ سلسلہ طالبان کے رہنما ملا محمد عمر کی پاکستان کے ایک ہسپتال میں طبی موت واقع ہونے کی خبر سے تعطل کا شکار ہو گیا تھا۔

اسلام آباد میں اس ماہ کے شروع میں منعقد ہونے والے ’ہارٹ آف ایشیا‘ کانفرنس میں افغانستان کے صدر اشرف غنی نے شرکت کی تھی۔ ان کے علاوہ اس کانفرنس میں بھارت کی وزیر خارجہ سمشا سوراج ، امریکہ اور چین کے نمائندوں بھی موجود تھے۔