’تمام خلیجی ریاستوں کی سلامتی پاکستان کے لیے اہم‘

راحیل شریف اور شہزادہ محمد بن سلمان تصویر کے کاپی رائٹ ISPR
Image caption پاکستان فوج کے سربراہ نے سعوی عرب کے وزیرِ دفاع اور نائب ولی عہد کو پاکستان کے تعاون کا یقین دلایا

سعودی عرب کے وزیر دفاع اور نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان السعود اتوار کو پاکستان پہنچے جہاں انھوں نے پاکستان کے وزیرِ اعظم محمد نواز شریف اور پاکستان فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف سے ملاقات کی۔

فوج کے شعبۂ تعلقاتِ عامہ سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق پاکستانی فوج کے سربراہ سے ملاقات میں سعودی وزیرِ دفاع نے خطے کی سلامتی اور دفاع پر تعاون کے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ جنرل راحیل شریف اور سعودی وزیرِ دفاع کے درمیان ملاقات جنرل ہیڈکوارٹرز میں ہوئی جس میں خطے کی سلامتی اور دفاعی امور پر بات چیت ہوئی۔

ایران و سعودی عرب ’خطرناک ترین موڑ‘ پر

’عرب و عجم کشیدگی میں وقت آنے پر ثالثی کریں گے‘

سعودی ایران تنازع میں پاکستان کی ’عدم مداخلت کی پالیسی‘

بیان کے مطابق جنرل راحیل نے سعودی وزیرِ دفاع کو کہا کہ سعودی عرب اور خلیجی ممالک کے اتحاد ’خلیج تعاون کونسل‘ کے ساتھ پاکستان کے تعلقات برادرانہ ہیں اور پاکستان ان ریاستوں کی سلامتی کو بہت اہمیت دیتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption دونوں رہنماؤں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مزید مستحکم کیا جائے گا اور سعودی عرب کی دفاعی سکیورٹی، دہشت گردی کے خلاف جنگ، تجارت، سرمایہ کاری اور افرادی قوت کی ضروریات سمیت سبھی شعبوں میں تعاون کو مزید بڑھایا جائے گا

وزیرِ اعظم ہاؤس سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق پاکستانی وزیرِ اعظم نے سعودی نائب ولی عہد کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے عوام سعودی عرب اور خادمین حرمینِ شریفین کو بڑی عزت کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔

دونوں رہنماؤں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مزید مستحکم کیا جائے گا اور سعودی عرب کی دفاعی سکیورٹی، دہشت گردی کے خلاف جنگ، تجارت، سرمایہ کاری اور افرادی قوت کی ضروریات سمیت سبھی شعبوں میں تعاون کو مزید بڑھایا جائے گا۔

تین دنوں کے دوران یہ کسی بھی سعودی اعلیٰ عہدیدار کا پاکستان کا دوسرا دورہ ہے۔ اس سے قبل جمعرات کو سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے پاکستان کا مختصر دورہ کیا تھا۔

دونوں ممالک نے اس بات پر رضامندی ظاہر کی کہ وہ انتہا پسندانہ سوچ کو شکست دینے کے لیے موثر حکمتِ عملی اختیار کریں گے۔

اس سے قبل اتوار کو شہزادہ محمد بن سلمان کی اسلام آباد آمد پر پاکستان کے وزیر دفاع خواجہ محمد آصف اور مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے ان کا استقبال کیا۔

پاکستان کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق سعودی وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان السعود خطے کی صورتحال پر پاکستانی وزیر دفاع خواجہ محمد آصف سے ملاقات کریں گے۔

اپنے مختصر دورے میں سعودی وزیر دفاع پاکستانی قیادت کے ساتھ ملاقاتوں میں دلچسپی کے باہمی امور پر بھی بات چیت کریں گے۔

وضح رہے کہ اس سے قبل جمعرات کو سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے پاکستان کا مختصر دورہ کیا تھا ہے۔

سعودی وزیرِ خارجہ نے جمعرات کی شام پاکستان پہنچنے کے بعد پاکستان کی برّی فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف، وزیر اعظم نواز شریف اور مشیرِ خارجہ سرتاج عزیز سے الگ الگ ملاقاتیں کیں تھیں۔

وزیر اعظم نواز شریف سے ملاقات میں سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے ایران اور سعودی عرب کے تعلقات کے بارے میں تازہ ترین صورتحال پر بات چیت کی تھی۔

اسی بارے میں