پشاور میں افغان قونصلیٹ کے اہلکار کے مکان پر فائرنگ

تصویر کے کاپی رائٹ bbc

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں نامعلوم افراد نے افغان قونصل خانے کے ایک عہدیدار کے مکان پر فائرنگ کی ہے۔

فائرنگ کے اس واقعے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

یہ واقعہ پشاور کے معروف علاقے یونیورسٹی ٹاؤن میں جمال الدین افغانی روڈ پر پیش آیا۔

ٹاؤن تھانے کے اہلکار عصمت نے بی بی سی کو بتایا کہ نامعلوم افراد نے جمعرات اور جمعے کی درمیانی شب دو سے ڈھائی بجےمکان پر فائرنگ کی۔

گولیوں کے نشان مکان کے گیٹ اور دیوار پر دیکھے جا سکتے ہیں۔

پولیس کا کہنا تھا کہ یہ مکان افغان قونصل خانے میں تعینات اہلکار ہمایوں کا ہے۔ اس حملے کی وجوہات معلوم نہیں ہو سکیں۔

اہلکار نے بتایا کہ یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ حملہ آور کس جانب سے آئے اور کہاں فرار ہوئے تاہم اس بارے میں تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

اس حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہو۔ یہ حملہ افغانستان کے شہر جلال آباد میں پاکستان قونصل خانے پر حملے کے تین روز بعد پیش آیا ہے۔

اس کے علاوہ پشاور اور اس کے مضافات میں دو روز سے سٹرائیک اینڈ سرچ آپریشن میں تیزی دیکھی جا رہی ہے جہاں درجنوں افراد کو حراست میں لیا گیا ہے جبکہ گذشتہ روز چوک یادگار میں کرنسی مارکیٹس کو گھیرے میں لے کر پولیس نے تلاشی لی اور 22 افراد کو ہنڈی یا غیر قانونی طریسے سے رقوم کی منتقلی پر حراست میں لیا تھا۔

پولیس حکام نے بتایا کہ ان میں سے بیشتر کو رہا کر دیا گیا ہے لیکن چند ایک اب بھی حراست میں ہیں جن سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔

اسی بارے میں