افغان امن: تیسرا اجلاس آج اسلام آباد میں

تصویر کے کاپی رائٹ w

افغانستان میں امن کے قیام اور اعتماد سازی کے لیے افغانستان، پاکستان، امریکہ اور چین کے چار ملکی رابطہ گروپ کا تیسرا اجلاس پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد میں ہفتے کو ہو گا۔

اس اجلاس میں پاکستان، افغانستان، چین اور امریکہ کے اعلیٰ حکام شریک ہوں گے۔

وزیراعظم کے مشیر برائے امور خارجہ سرتاج عزیز افتتاحی اجلاس سے خطاب کریں گے۔

اس سے قبل اس گروپ کا پہلا اجلاس اسلام آباد ہی میں ہوا تھا جبکہ دوسرا اجلاس افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ہوا تھا۔

گیارہ جنوری کو اسلام آباد میں ہونے والے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سرتاج عزیز نے کہا تھا کہ افغانستان میں مصالحتی عمل غیر مشروط ہو اور اعتماد کی بحالی کے لیے اقدامات ضروری ہیں۔

اجلاس کے آغاز میں سرتاج عزیز نے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ مذاکراتی عمل کے آغاز کے لیے کسی قسم کی شرائط نہ رکھی جائیں کیونکہ ایسا کرنا مدد گار ثابت نہیں ہو گا۔

کابل میں ہونے والے اجلاس کے بعد جاری ہونے والے اعلامیے میں طالبان سے مطالبہ کیا گیا تھا کہ وہ ملک میں دائمی امن کے لیے افغان حکومت کے ساتھ اپنے اختلافات سیاسی طریقے سے اور افغان عوام کی خواہشات کے مطابق حل کریں۔

مذاکرات میں امن کے روڈ میپ پر بھی پیش رفت ہوئی تھی۔ اعلامیے کے مطابق روڈ میپ میں اس بات پر زور دیا گیا کہ ایسی فضا پیدا کی جائے جس سے افغانستان کی سربراہی میں اور افغانوں کی ملکیت میں افغان حکومت اور طالبان گروہوں کے درمیان امن مذاکرات شروع کرائے جا سکیں جن کا مقصد افغانستان اور خطے میں تشدد کا خاتمہ اور دائمی امن پیدا کرنا ہو۔

اسی بارے میں